کراچی سے چھ ہزار افراد کو گرفتار کر کے رہا کیوں کیا گیا،فرحت اللہ بابر

کراچی سے چھ ہزار افراد کو گرفتار کر کے رہا کیوں کیا گیا،فرحت اللہ بابر

کراچی (اے این این) پیپلز پارٹی کے رہنما فرحت اللہ بابر نے کراچی میں گرفتار ی کے بعد 6ہزار افراد کی رہائی پر سوال اٹھا دیا۔جمعہ کو کراچی میں سینٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے انسانی حقوق کا اجلاس سینٹر نسرین جلیل کی صدارت میں ہوا ، سینٹر فرحت اللہ بابر نے سوال کیا کہ کراچی سے چھ ہزار افراد کو کیوں گرفتار کیا گیا اور پھر گرفتار کئے افراد کو رہا کیوں کیا گیا؟ ۔جس پر رینجرز کے بریگیڈ خرم شہزاد کا کہنا تھا کہ ہم قانون کے مطابق چھاپہ مار کر کارروائیاں اور گرفتاریاں کرتے ہیں ، کارروائیوں میں پکڑے گئے بے گناہ افراد کو رہا کر دیا جاتا ہے ۔ایڈیشنل آئی جی کراچی مشتاق مہر نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ 22 اگست کو پریس کلب کے باہر سے پولیس نے ایک سو اور رینجرز نے ڈیڑھ سو افراد کو حراست میں لیا ، تمام بے گناہ افراد چھوڑ دئیے ہیں ، صرف 13 افراد کو باقاعدہ گرفتار کیا گیا ۔وفاقی وزیر انسانی حقوق کامران مائیکل کا کہنا تھا کہ کراچی جیل میں 2 ہزار 4 سو قیدی رکھنے کی گنجائش ہے لیکن جیل میں 6 ہزار سے زائد قیدیوں کو رکھا گیا ہے ۔

فرحت اللہ بابر

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...