خیبر ایجنسی ،ریموٹ کنٹرول بم دھماکہ کی پاداش میں صدو خیل قبیلے کو نوٹس

خیبر ایجنسی ،ریموٹ کنٹرول بم دھماکہ کی پاداش میں صدو خیل قبیلے کو نوٹس

خیبر ایجنسی ( بیورورپورٹ) لنڈی کوتل کی پولیٹیکل انتظامیہ نے چند روز پہلے خیبر میں دھماکہ ہونے کے بعدصدو خیل قبیلے کو نوٹس جاری کر دیا ، ایک ہفتے میں ملوث افراد کو حوالے نہیں کیا گیا تو ایف سی آر کے تحت سدو خیل قبیلے کے خلاف ایکشن لینگے ، تحصیلدار لنڈی کوتل تحسین اللہ کا مؤقف، ہمارے قبیلے میں کوئی دہشت گرد نہیں ، ہم محب وطن اور پرامن ہیں،انتظامیہ شدت پسندوں کی نشاندہی کریں تو حوالے کر دینگے، بے گناہ گرفتار افرادکو رہا کیا جائے، سدو خیل قبیلے کے مشر اشرف سدو خیل کا بیان ۔ گزشتہ جمعرات کے روز خیبر میں سڑک کناے ریموٹ کنٹرول بم دھماکے میں طورخم کسٹم کے دو اہلکار زخمی ہوئے تھے اور ان کی گاڑی اور خاصہ دار فورس کی گاڑی کو دھماکے میں نقصان پہنچا تھا جس کے بعد سیکیورٹی فورسز اور پولیٹیکل انتظامیہ نے علاقائی ذمہ داری کے تحت سدو خیل اور شیخوال قبائل کے درجنوں افراد کو گرفتار کر لیا تھا گزشتہ روز پولیٹیکل انتظامیہ لنڈی کوتل نے خیبر سدو خیل قبیلے کو نوٹس جاری کیا تھا جس میں تحصیلدار تحسین اللہ کے مطابق مذکورہ قبیلے کو ایک ہفتے کی مہلت دی گئی ہے کہ قبیلے کے مشران روایات اور علاقائی ذمہ داری کے تحت دھماکے میں ملوث عناصر کو پولیٹیکل انتظامیہ کے حوالے کریں ورنہ ایف سی آر کے تحت ان کے خلاف مذید کارروائی کی جائیگی اور ان کی مراعات کو بھی بند کیا جا سکتا ہے دوسری طرف سدو خیل قبیلے کے ایک اہم مشر و رہنماء اشرف سدو خیل نے کہا کہ ان کے قبیلے کے افراد محب وطن اور پرامن ہیں اور ان چیزوں سے ان کا کوئی تعلق نہیں اور اگر انتظامیہ کو شدت پسندوں کا علم ہے تو نشاندہی کریں تاکہ قومی مشران مشورہ کر کے ان کی حوالگی کا بندوبست کریں تاہم انہوں نے کہا کہ ان کے علاقے میں ایسے جرائم پیشہ عناصر نہیں ہیں انہوں نے بے گناہ افراد کی رہائی کا بھی مطالبہ کیا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر