امریکہ میرا ملک،افریقی جائے پیدائش کا طعنہ نہ دو،الہان عمر کا ٹرمپ کو کرارا جواب

  امریکہ میرا ملک،افریقی جائے پیدائش کا طعنہ نہ دو،الہان عمر کا ٹرمپ کو ...

  

 واشنگٹن(اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی کانگریس وویمن الہان عمر نے صدر ٹرمپ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ میرا ملک ہے، مجھے افریقی ملک میں پیدا ہونے کا طعنہ نہ دو۔ کانگریس کے ایوان نمائندگان کی سیاہ فام مسلم خاتون رکن نے صدر کی تنقید کا منہ توڑ جواب اپنے ایک تازہ ٹوئیٹر پیغام کے ذریعے دیا۔ انہوں نے لکھا ہے کہ”پہلی بات تو یہ ہے کہ امریکہ میرا ملک ہے اور مجھے آپ کو بتانا ہے کہ میں اس ایوان کی رکن ہوں جس نے آپ کو قابل مواخذہ جانا اور آپ کا مواخذہ کیا۔ دوسری بات یہ ہے کہ میں اپنے سابق افریقی ملک صومالیہ کی خانہ جنگی کے دوران آٹھ سال کی عمر میں والدین کے ساتھ فرار ہو کر یہاں آئی تھی۔ ایک آٹھ سال کی بچی حکومت نہیں چلاتی جس کا آپ طعنہ دے رہے ہو۔ اگرچہ آپ امریکہ کو ایسے چلا رہے ہو جیسا کہ صومالیہ کو چلایا جا رہا ہے۔ الہان عمر صومالیہ کی مہاجر ہے جو 2000ء میں امریکی شہری بنی تھی اور گزشتہ انتخابات میں منی سوٹا کی ریاست سے امریکی کانگریس کی رکن منتخب ہوئی تھی۔ صدر ٹرمپ نے منگل کے روز پنسلوینیا کی ریاست میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے الہان پر طنز کیا تھا کہ ایک افریقی ملک میں پیدا ہونے والی خاتون جو اب امریکی شہری بنی ہے مجھے سمجھا رہی ہے کہ ملک کو کیسے چلانا چاہئے۔ صدر ٹرمپ ماضی میں بھی الہان عمر پر ہمیشہ نکتہ چینی کرتے رہے ہیں وہ کہتے ہیں کہ الہان اسرائیل کو اس لئے تنقید کا نشانہ بناتی ہے کیونکہ یہ ”ترقی پسند ڈیموکریٹ“ یہودیوں کے نظریات کی مخالف ہے۔ایک مرتبہ صدر ٹرمپ نے تو انہیں یہاں تک کہہ دیا تھا کہ اسے تو ”جرائم میں لت پت“ اپنے سابق ملک صومالیہ چلے جانا چاہئے۔ یاد رہے کہ الہان عمر امریکہ کی ریاست منی سوٹا سے کانگریس کی رکن منتخب ہوئی ہیں جو ہمیشہ ڈیمو کریٹک پارٹی کی حامی اور ری پبلکن پارٹی کی مخالف رہی ہے اور اس ریاست میں اس مرتبہ بھی صدارتی انتخابات میں شکست کی توقع ہے۔

جواب

مزید :

صفحہ اول -