اینٹی سموگ ٹاورزتعمیر‘پلاسٹک بیگز پابندی کا معاملہ، حکومت سے رائے طلب

اینٹی سموگ ٹاورزتعمیر‘پلاسٹک بیگز پابندی کا معاملہ، حکومت سے رائے طلب

  

لاہور(نامہ نگار)لاہورہائی کورٹ نے ملک بھر میں اینٹی سموگ ٹاورز کی تعمیراور ڈی ایچ اے میں پلاسٹک بیگز کے استعمال پر پابندی کا معاملہ پروفاقی حکومت سے اینٹی سموگ ٹاورز تعمیر کرنے کے لئے رائے طلب کرلی ہے،مسٹرجسٹس شاہد کریم نے ماحولیاتی آلودگی اور سموگ کیخلاف درخواست پر تین صفحات پرمشتمل تحریری حکم جاری کر دیاہے،عدالتی تحریری حکم میں کہا گیاہے کہ اسسٹنٹ اٹارنی جنرل مقامی سطح پر اینٹی سموگ ٹاورز کی تعمیر کیلئے وزرات سائنس و ٹیکنالوجی سے مشاورت کریں، کیا وزارت سائنس و ٹیکنالوجی مقامی طور پر اینٹی سموگ ٹاورز کی تعمیر کرنے کیلئے رضا مند ہے؟ وفاقی حکومت 24 ستمبر کو اینٹی سموگ ٹاورز کی تعمیر سے متعلق رپورٹ پیش کرے، ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی کے وکیل نے پلاسٹک بیگز کے استعمال پر پابندی کے حکم پر عمل درآمد کروانے کی یقین دہانی کروائی ہے، محکمہ ماحولیات کی پلاسٹک بیگز کے استعمال کیخلاف کارروائی میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جائے گی، بھٹہ مالکان نے محکمہ ماحولیات کو 7 نومبر سے 31 دسمبر 2020ء تک اینٹوں کے بھٹے بند رکھنے کی یقین دہانی کروائی ہے، بھٹہ مالکان کی جانب سے رضاکارانہ طور پر اینٹوں کے بھٹے بند کرنے کا اقدام قابل ستائش ہے، عدالتی تحریری حکم میں مزید کہاگیاہے کہ محکمہ تحفظ ماحولیات بھٹہ مالکان اور محکمے کے درمیان معاہدے پر من و عن عمل درآمد کروائے، عدالتی حکم پر انٹرنیشنل گروتھ سنٹر کے عثمان نعیم نے اینٹی سموگ ٹاورز کے مثبت اثرات بارے رپورٹ پیش کی ہے جس کے مطابق  دنیا کے مختلف ممالک میں اینٹی سموگ ٹاوز کا استعمال کیا جا رہا ہے، درخواست گزار کے وکیل کے مطابق بھارت میں بھی اینٹی سموگ ٹاورز تعمیر کئے جا رہے ہیں، اس کیس کی مزید سماعت آج24ستمبر کوہوگی۔

مزید :

علاقائی -