بھارت‘ امریکہ پاکستان میں افراتفری پھیلانے کیلئے سرگرم‘ پروفیسر ساجد میر 

بھارت‘ امریکہ پاکستان میں افراتفری پھیلانے کیلئے سرگرم‘ پروفیسر ساجد میر 

  

 ملتان (سٹی رپورٹر)مرکزی جمعیت اہلحدیث کے سربراہ علامہ پروفیسر ساجدمیر نے کہاہے کہ حکومت عوام کو سہولیات دینے میں مکمل طورپر ناکام ہو گئی ہے عام (بقیہ نمبر42صفحہ 6پر)

آدمی کی زندگی پہلے سے مشکل ہو گئی ہے اشیاء اور خورد نوش کی قیمتوں میں ہونے والے آئے روز کے اضافہ نے غریب عوام کی حالت بگاڑ کے رکھ دی ہے غریب عوام کے لئے بجلی۔گیس کے بل بھرنا مشکل ہوگئے ہیں ا ڈالر کی قیمت بہت اوپر جاچکی ہے عوام کو کوئی ریلیف ملا ہے نہ ملتے نظر آ رہاہے وزیر اعظم نے ایک کروڑ نوکریوں کی بات کی مگر لاکھوں لوگ بے روگار کر دیئے گئے جماعت اسلامی کا اے۔پی۔سی میں شرکت نہ کرنے کا اپنا فیصلہ تھا جماعت اسلامی سولو فلائٹ کی کوشس کرتی ہے جبکہ جماعت اسلامی کی سولو فلائٹ کی کوشس بار بار کریش ہوئی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز ملتان پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا اس موقع پر علامہ عبد الرحیم گجر، علامہ سید خالد محمود ندیم، علامہ عنایت اللہ رحمانی، قاری ہدایت اللہ رحمانی، قاری محمد امین سمیت دیگر بھی شریک تھے اس موقع پر پرفیسر ساجد میر نے مزید کہاہے کہ صحابہ اور اہل بیت پر بات برداشت نہیں کریں گے بدقسمی سے چند تلخ اور ناقابل برداشت واقعات سامنے آئے جو کہ افسوس ناک ہیں سوچی سمجھی سازش کے ذریعے ملک کا امن خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے شعیہ علمائے کرام کی جانب سے صحابہ کرام کے خلاف بات کرنے والے عناصر کی مذمت کرنا قابل ستائش ہے جنھوں نے توہین کی ان کے پاس ملک سے فرار ہونے کے لئے 5 ائیر ٹکٹ موجود تھے یہ سب حکومت کی حمایت کے بغیر نہیں ہوسکتا  حکومت نواز شریف کو تو ملک میں لانے کی بات کرتی ہے مگر جو شخص گستاخ ہے اس کولانا زیادہ ضروری ہے ہمارا مطالبہ ہے توہین کرنے والے شخص کو واپس لایا جائے انہوں نے کہاہے کہ ملی یک جہتی کونسل نے ملک میں امن و امان قائم رکھنے میں اپنا بھرپور کردار ادا کیا۔ ملی یکجہتی کونسل کا ضابطہ اخلاق بنانے والی کمیٹی کا میں سربراہ تھا اس وقت جو ضابطہ اخلاق بنائے گئے تھے ان پر عمل در آمد کرایا جائے آج بھارت اور امریکہ ملکر پاکستان میں افرا تفری پھیلانا چاہتا ہے امریکہ نے اس کام کے لئے بھاری بجٹ مختص کر رکھا ہے ہم سب کوملکر دشمن کی اس سازش کوناکام بنانا ہے انہوں نے کہاہے کہ پاکستان میں مختلف مکاتب فکر مسلکی اختلافات کے باجو دامن وآٹشی سے رہ رہے مسلکی اختلافات کو اختلافات تک ہی محدود رکھا جائے اسے مخالفت میں تبدیل نہ کیاجائے  ہم سب مللکر دشمن کی سازش کو ناکا م بنائیں گے۔

سرگرم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -