محکمہ خوراک میں گندم ترسیل و تقسیم سمیت تمام امور ڈیجیٹائز ڈکئے جائینگے:میاں خلیق الرحمان

محکمہ خوراک میں گندم ترسیل و تقسیم سمیت تمام امور ڈیجیٹائز ڈکئے ...

  

 پشاور (سٹاف رپورٹر)وزیراعلی کے مشیر برائے محکمہ خوراک میاں خلیق الرحمان نے کہا ہے کہ محکمہ خوراک کے تمام امور سمیت گندم کی خریداری، ترسیل و تقسیم کو ڈیجیٹائزڈ کرنے اورعوام کو سبسڈائزڈ آٹا کی فراہمی کے لیے ویلج کونسل سطح پر ڈسٹری بیوشن پوائنٹس قائم کئے جا ئیں گے جبکہ 5 لاکھ ٹن گندم درآمد کرانے کے لئے اگلے ماہ اجلاس بھی طلب کرلیا گیا ہے۔ عوام کی صحت کو مدنظر رکھتے ہوئے تندوروں میں فائن آٹے کی بجائے سادہ (مکس) آٹے کے استعمال کو متعارف کرایا جائے گا، منصوبے کے تحت حیات آباد کے تندوروں میں فائن آٹے کی بجائے سادہ (مکس) آٹے کی روٹی کی دستیابی بطور پائلٹ پراجیکٹ شروع کرنے جارہے ہیں۔ انہوں نے عوامی شکایات کے فوری ازالے کے لئے محکمہ خوراک میں شکایات سیل کے فوری قیام لئے ہدایات جاری کردی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصب سنبھالتے ہی فوڈ ڈائریکٹوریٹ کے پہلے دورے اور وہاں پر ایک اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سیکرٹری محکمہ خوراک خوشحال خان، ڈائریکٹر فوڈ زبیر احمد سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی۔ اجلاس کو محکمہ خوراک کے انتظامی ڈھانچے وامور، قوانین، گندم کی تازہ صورتحال، سٹوریج استعداد، پرائس کنٹرول طریقہ کار، محکمہ خوراک کے ضلعی دفاتر وغیرہ کے بارے تفصیلی بریفننگ دی گئی۔ اجلاس کو محکمہ خوراک کے سالانہ ترقیاتی منصوبوں، جاری ترقیاتی منصوبوں اور تیز تر عمل درآمد والے منصوبوں کے حوالے سے بھی تفصیلاً بتایا گیا۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ خوراک کے کل 14 منصوبے ہیں جن میں 11 جاری ترقیاتی منصوبے منظور ہوچکے ہیں جبکہ تین نئے ترقیاتی منصوبوں میں سے دو کی بھی منظوری ہوچکی ہے۔ پانچ منصوبے تکمیل کے آخری مراحل میں ہیں جبکہ جاری منصوبوں کے لیے 446 ملین اور نئے منصوبوں کے لیے 160 ملین روپے مختص کیے گئے ہیں۔ منصوبوں کی تکمیل پر کل 606 ملین روپے خرچ کیے جائیں گے۔ اجلاس کو صوبے میں گندم کی موجودگی اور خریداری کے لیے لئے کئے گئے اقدامات اور طریقہ کار کے حوالے سے بھی آگاہ کیا گیا۔ اجلاس کو مزید بتایا گیا کہ محکمہ خوراک نے پرائس کنٹرول میکنزم کے تحت امسال جنوری سے ستمبر تک 6849 دکانوں کا معائنہ کیا ہے جبکہ جرمانوں کی مد میں دو کروڑ روپے کاحصول یقینی بنایا ہے۔ اس موقع پر مشیر خوراک میاں خلیق الرحمان نے صحت عامہ کی خاطر محکمہ خوراک کو تندوروں میں فائن آٹے کی بجائے سادہ (مکس) آ ٹا متعارف کرانے کے لیے طریقہ کار وضع کرنے کی ہدایت کی جبکہ منصوبے کے تحت حیات آباد کے تندوروں میں فائن آٹا کی بجائے سادہ (مکس) آٹے کی روٹی کی دستیابی بطور پائلٹ پراجیکٹ شروع کرنے کا  بھی  فیصلہ ہوا۔  مشیر خوراک نے تندوروں میں ڈیجیٹل سکیل، ریٹ لسٹ اورعوام کی آگاہی کے لئے بینر لگانے کی بھی ہدایت کی ہے۔ مشیر خوراک نے گندم کی مزید خریداری کے لئے طریقہ کار وضع کرنے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے محکمہ خوراک کی خالی آسامیوں پر بھرتی کے عمل کو تیز کرنے اور گندم سٹوریج کیپسٹی بڑھانے کی بھی ہدایت کی۔ انہوں نے سرکاری سستا آٹا پوائنٹس میں سبسڈائز ڈآٹے کی حقدار کو فراہمی یقینی بنانے اور معیار کو بہتر بنانے کے لیے سیل پوائنٹس کے معائنے ممکن بنانے کی بھی ہدایت کی ہے۔ مشیر خوراک نے مزید کہا ہے کہ تمام حکام اپنے فرائض کو یقینی بنائیں، سرکاری امور میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی، کسی کے ساتھ زیادتی نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان کی قیادت میں عوام کو سبسڈائزڈ آٹے کی فراہمی یقینی بنایا جائے گا۔

میاں خلیق الرحمان 

مزید :

صفحہ اول -