”شیخ رشید نے مسلم لیگ میں (ن )اور (ش) کی پیشگوئی کی ہے “ صحافی کے اس سوال پر شہبازشریف کا نہایت دلچسپ جواب 

”شیخ رشید نے مسلم لیگ میں (ن )اور (ش) کی پیشگوئی کی ہے “ صحافی کے اس سوال پر ...
”شیخ رشید نے مسلم لیگ میں (ن )اور (ش) کی پیشگوئی کی ہے “ صحافی کے اس سوال پر شہبازشریف کا نہایت دلچسپ جواب 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )اپوزیشن لیڈر شہبازشریف منی لانڈرنگ کیس میں ضمانت کی درخواست کی سماعت کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں موجود ہیں جہاں انہوں نے صحافیوں سے کمرہ عدالت میں غیر رسمی گفتگو بھی کی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہبازشریف سے صحافیوں نے کمرہ عدالت میںموقع دیکھ کر پوچھا کہ ” شیخ رشید نے مسلم لیگ میں (ن) اور (ش) کی پیشگوئی کی ہے؟ شہبازشریف نے جواب دیا کہ شیخ رشید کب کے ” ش “ ہو چکے ہیں۔ صحافی نے شہبازشریف سے محمد زبیر کی آرمی چیف سے ملاقات کے بارے میں جاننے کیلئے سوالات کیے تو شہبازشریف اس سوال پر متعدد بار پوچھنے کے بعد بھی خاموش رہے اور کوئی جواب نہیں دیا ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ آئی ایس پی آر کی جانب سے کہا گیا تھا کہ محمد زبیر نے آرمی چیف سے ملاقات کی تھی تاہم بعدازاں محمد زبیر نے بھی ملاقات کی تصدیق کر دی تھی ۔

مسلم لیگ ن کے صدراور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہبازشریف کی منی لانڈرنگ اور آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت ہوئی،اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے ، پولیس کی بھاری نفری عدالت میں تعینات کی گئی تھی ،پولیس نے لیگی کارکنوں کو عدالت کے اندر جانے سے روک دیا۔

 صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف نے عدالت میں وکلا سے کیس سے متعلق مشاورت کی،اعظم نذیر تارڑ اور عطااللہ تارڑ نے شہبازشریف کوکیس سے متعلق بریفنگ دی۔

شہبازشریف اپنے وکلا کے ساتھ روسٹرم پر آگئے،شہبازشریف کے وکلا نے شہزاد اکبر کی پریس کانفرنس پر دوبارہ اعتراض اٹھا دیا، وکیل اعظم نذیر تارڑ نے کہاکہ یہ شہبازشریف کو گرفتار کرکے کس انا کی تسکین چاہتے ہیں ، روزانہ پیغام دیا جاتا ہے عدالت آتے ہوئے کپڑے ساتھ لائیں ، میڈیا پر آتا ہے کہ دن گنے گئے ہیں ، گرفتاری ہو گی ، عدالت اس طرح کے بیانات کانوٹس لے۔

وکیل شہبازشریف نے کہاکہ یہ معاملہ عدالت میں ہے لیکن شہزاد اکبر کی اس کیس پر ہیڈلائنز لگی ہیں ،2 منٹ کا کیس ہے، اب سپریم کورٹ کا ایک فیصلہ ہے اس کی نقول کیلئے درخواست دیدی،سپریم کورٹ نے کہاکہ ریفرنس فائل ہو جائے تو کس انا کی تسکین کیلئے نیب گرفتاری مانگتا ہے ، امید ہے سپریم کورٹ کے فیصلے کی نقول آج مل جائے گی ۔

 شہبازشریف کے وکیل امجد پرویز نے قانونی نکات پر دلائل دیتے ہوئے کہاکہ جب ایک شخص کیخلاف کئی کیسز ہوں تو ہر کیس میں بار بار گرفتار نہیں کیا جاتا، شہباز شریف کو جون میں طلب کیاگیا، مئی میں پہلے ہی وارنٹ جاری کردیئے گئے ، وکیل امجد پرویز نے کہاکہ ایک طرف شہبازشریف کو پوزیشن واضح کرنے کیلئے طلب کرتے ہیں ، دوسری جانب شہبازشریف کی گرفتاری کا فیصلہ پہلے ہی ہو چکا ہوتا ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -