کرگئے نام محبت کر کے | جگر بریلوی |

کرگئے نام محبت کر کے | جگر بریلوی |
کرگئے نام محبت کر کے | جگر بریلوی |

  

کرگئے نام محبت کر کے

جی گئے ہم توکسی پر مر کے

کھل گئے آہ جو روکی دل میں

زخم محتاج نہیں نشتر کے

منع کرتے ہو اگرہنسنے کو

ر وہی لینے دو ہمیں جی بھر کے

دین و دنیا کو بھی کھو کر ہم نے

بھید پائے نہ ترے تیور کے

یار منزل پہ جگر جا پہنچے

دو قدم تم نہ جگہ سے سرکے

شاعر: جگر بریلوی

(مجموعہ کلام: انتخابِ جگر بریلوی؛سال اشاعت،1960 )

Kar   Gaey   Naam   Muhabbat   Kar   K

Ji   Gaey   Ham   Toi   Kisi   Par   Mar   K

Khull   Gaey   Aah   Jo   Roki   Dil   Men

Zakhm   Mohtaaj   Nahen   Nishtar   K 

Manaa   Kartay   Ho   Agar     Hansany   Ko

Ro   Hi    Lainay   Do    Hamen    Ji   Bhar   K

Deen -o-Dunya   Ko   Bhi    Kho   Kar   Ham   Nay

Bhaid    Paaey    Na   Tiray   Taiwar   K

Yaar    Manzil    Pe   JIGAR JA   Pahunchay

Do   Qadam   Tum   Na    Jagah    Say    Sirkay

Poet: Jigar   Barelvi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -