ایف بی آر نے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ پکڑلی

ایف بی آر نے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ پکڑلی
ایف بی آر نے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ پکڑلی
سورس: creative commons license

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) ایف بی آر نے ایک کمپنی کی اربوں روپے کی مبینہ منی لانڈرنگ اور ٹیکس چوری کا سراغ لگا لیا۔ پاکستان ٹوڈے کے مطابق اس کمپنی کا نام ’برشین ایل پی جی پاکستان لمیٹڈ‘ ہے جو پیچیدہ اکاﺅنٹنگ ٹیکنیکس اور فرضی کمپنیوں کے ذریعے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ اور ٹیکس چوری کر رہی تھی۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ اس کمپنی کے خلاف تحقیقات ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر بشیر اللہ کی زیرنگرانی کی گئیں۔ 

تحقیقات میں یہ بھی انکشاف ہواکہ یہ کمپنی سمگل شدہ ایل پی جی کی خریدوفروخت میں بھی ملوث ہے جو تفتان بارڈر کے راستے پاکستان میں سمگل کی جاتی ہے۔ ذرائع کے مطابق اس کمپنی نے اب تک 1ہزار 775ملین روپے ٹیکس چوری کیا اور اس کے سی ای او ، سی ایف او اور دیگر عہدیداروں نے اسی کالے دھن سے اربوں روپے کی جائیدادیں بنارکھی ہیں۔دو سالوں میں اس کمپنی نے سمگل شدہ ایل پی جی کی فروخت سے بالترتیب72کروڑ 60لاکھ روپے اور 82کروڑ 80لاکھ روپے کمائے۔

ان لوگوں نے فرضی کمپنیوں کا ایک نیٹ ورک بنا رکھا تھا اور ان کمپنیوں کے نام پر کئی بینک اکاﺅنٹس تھے جن کے ذریعے یہ لوگ منی لانڈرنگ اور ٹیکس چوری کرتے تھے۔ یہ ایک انتہائی پیچیدہ اور تکنیکی نیٹ ورک تھا جو ایف آئی اے نے پکڑا۔اس کمپنی نے 24کروڑ روپے کی سرمایہ کاری بھی ایک نجی لمیٹڈ کمپنی میں کر رکھی تھی جسے اس کے عہدیداروں نے مخفی رکھا ہوا تھا۔ کمپنی کے خلاف ڈپٹی ڈائریکٹر آئی اینڈ آئی ۔آئی آر کراچی کی زیرنگرانی مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ 

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -