سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب کا بہاولپور، لودھراں کا دورہ

سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب کا بہاولپور، لودھراں کا دورہ

  

بہاولپور (بیورو رپورٹ،ڈسٹرکٹ بیورو) سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل نے بہاول پور اور لودھراں کا دورہ کیا۔ انہوں نے اس موقع پر کہا کہ کپاس کے آخری ٹینڈے کے کھلنے تک فصل کی بہتر نگہداشت میں کسی قسم کی سستی نہ برتی جائے۔ انہوں نے کپاس کے آئی پی ایم نمائشی پلاٹوں پر بائیو پیسٹی سائیڈز کے استعمال سے 15 سے 20 من کپاس فی ا(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

یکڑ کا اضافہ خوش آئند قرار دیا۔ سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کپاس کی بہتر قیمت کی بدولت آئندہ سال بھی کپاس کے زیر کاشت رقبہ بڑھنے کے روشن امکانات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امسال غیر معمولی بارشوں کے باوجود کپاس کی فصل کاشتکاروں کیلئے نقصان کا باعث نہیں بنی اور زرعی زہروں کے کم استعمال کی وجہ سے لاگت کاشت میں بھی واضح کمی آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ 2 سے 3 ہفتے گلابی سنڈی سے محتاط رہنے کی ضرورت ہے اور کاشتکار جاری کردہ ایڈوائزری کے مطابق بوٹینیکل ایکسٹریکٹس اور کیمیائی زہروں کے سپرے شیڈول پرعملدرآمد یقینی بنائیں تاکہ گلابی سنڈی کے ساتھ ساتھ سفید مکھی کو بھی کنٹرول کیا جاسکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کپاس کی چنائی میں تمام تر احتیاطی تدابیر اپنائی جائیں۔ نمی اور آلودگی سے پاک کپاس کی چنائی کرائی جائے تاکہ بہتر معاوضہ مل سکے۔ سیکرٹری زراعت نے فیلڈ فارمیشنز کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کاٹن جننگ فیکٹریوں اور آئل ملوں میں بھی فوری طور پر گلابی سنڈی کی مانیٹرنگ کیلئے فیرامون ٹریپس لگائے جائیں اور مل مالکان کو پابند کیا جائے کہ وہ روزانہ کی بنیاد پرجننگ ویسٹ، کچرا وغیرہ کو تلف کریں۔ سیکرٹری زراعت نے کہا کہ گھریلو سطح پر کپاس کا بیج بنانے کیلئے کاشتکار ترجیحاً پودے کی درمیان والی پھٹی استعمال کریں۔ کپاس کی چنائی صبح 10 بجے سورج کی روشنی میں کریں۔ بیج کیلئے چنائی صرف صحتمند کھلے ٹینڈوں سے کی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کپاس کی چنائی میں تمام تر احتیاطی تدابیر اپنائی جائیں۔ نمی اور آلودگی سے پاک کپاس کی چنائی کرائی جائے تاکہ بہتر معاوضہ مل سکے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -