کرنٹ، مزدور سمیت دوجاں بحق، پرانی دشمنی پر ایک قتل، خاتون کی خودکشی 

کرنٹ، مزدور سمیت دوجاں بحق، پرانی دشمنی پر ایک قتل، خاتون کی خودکشی 

  

 ملتان،رحیم یارخان،بستی ملوک،  شادن لنڈ، اوچشریف، کوٹ ادو’(خصوصی رپورٹر،نمائندہ پاکستان، تحصیل رپورٹر) تھانہ کالا کے علاقہ بیٹ علیانی کے رہائشی محمد باقر اور ذولفقارعلی پھروانی جو کہ آپس میں قریبی رشتہ دار تھے موٹر سائیکل پر گھر سے شادن لنڈ آ رہے تھے کہ انڈس ہائی وے پر ٹرالر سے تصادم ہو گیا جس کے نتیجہ میں محمد باقر موقع پر جاں بحق ہوگیا جبکہ زولفقارعلی شدید زخمی ہوگیا زخمی کو آر ایچ سی شادن لنڈ لایا (بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

گیا جہاں طبی امداد کے بعد حالت تشویشناک ہونے پر ڈیرہ غازی خان ریفر کردیاگیا مگر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے راستہ میں دم توڑ دیا گاڑی ڈرائیور جائے حادثہ سے فرار ہوگیا واقعہ کی اطلاع ملتے ہی مقامی اور پٹرولنگ پولیس موقع پر پہنچ گئی اور قانونی کاروائی شروع کر دی۔بستی ملوک کے علاقے اڈا لاڑ غلہ مندی میں مبینہ طور پر واپڈا حکام کی غفلت کی وجہ سے منڈی میں کام کرنے والا مزدور بچہ بعمر 14/15 سال کرنٹ لگنے سے جانبحق ہوگیا۔ جس پر مشتعل عوام نے اڈا لاڑ پر نیشنل ہائی وے اینڈ موٹر وے روڈ بلاک کردیا اور واپڈا کے خلاف نعرے بازی بھی کی نیشنل ہائی وے اینڈ موٹر وے روڈ بلاک ہونے کی وجہ سے گاڑیوں کی لمبی لمبی لائنیں لگ گئیں زرائع کے مطابق واپڈا کی طرف سے ناجائز طور پر لگائی گئی بجلی کی تاروں کی وجہ سے اس سے قبل بھی 4 افراد کرنٹ لگنے سے جان کی بازی ہار چکے ہیں اہلیان علاقہ کے طویل احتجاج پر واپڈا اہلکاروں نے عارضی طور پر تاریں کاٹ دیں تاہم واپڈا کی طرف سے ایس ڈی او سمیت کوئی کی اعلی آفیسر موقع پر نہ پہنچا اور نہ ہی مرنے والے مزدور کے لواحقین کی کسی قسم کی امداد کی گئی دینو شاہ کی رہائشی 25 سالہ پٹھانی مائی نے آئے روز کے گھریلو جھگڑوں اور مالی پریشانیوں سے دلبرداشتہ ہو کر زہریلا سپرے پی لیا حالت غیر ہونے پر ورثا نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہو پائی اور دم توڑ گئی جبکہ اقدام خودکشی کرنے والے 3 افراد ڈہرکی کی 15 سالہ فوزیہ بی بی چک 72 کی 20 سالہ عالیہ بی بی اور خانبیلہ کی 16 سالہ علینہ کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے۔تھانہ بستی ملوک کے علاقے علاقہ اڈا لاڑ میں محنت کش شہزاد مزدوری کے دوران بجلی 11ہزار کے وی کی تاروں سے چھوکر جان بحق ہوگیا۔مزدور کی ہلاکت پر ورثا اور اہل علاقہ نے میت بہاولپور روڈ پر رکھ کر احتجاج کیا۔مظاہرین کا کہناتھا کہ اس مقام پر کرنٹ لگنے کا یہ چوتھا واقعہ ہے اس سے قبل بھی تین مزدور بجلی کے جھولتے تاروں سے کرنٹ لگنے سے اپنی جان سے ہاتھ دھو چکے ہیں سب ڈویژن قصبہ مڑل۔میپکو حکام ہرمرتبہ جھوٹے وعغ کا لارا دیکر چلے جاتے ہیں۔ متعدد بار شکایات کے باوجود میپکو حکام ٹس سے مس نہیں ہوئے،احتجاج کی وجہ سے بہاول پور روڈ پر ٹریفک کی لمبی لمبی قطاریں لگ گئیں۔پنجاب اور نیشنل ہائی وے پولیس نے مظاہرین سے مذاکرات کیے لیکن ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔مظاہرین کا کہناتھا کہ بجلی کے تاروں کی تبدیلی اور میپکو کے متعلقہ  ڈویژن قصبہ مڑ ل  عملہ کے خلاف کاروائی تک ان کا احتجاج جاری رہے گاا وچشریف کے نواحی علاقے نوشہرہ تھانہ کی حدود میں برتھ برادری سے تعلق رکھنے والے مخالفین نے بستی جوئیہ سے  دن دہاڑے محمد غفور اور جاوید نامی شخص کو ان کے رشتہ داروں کے گھر سے زبر دستی اغوا کر لیا اور بیہمانہ تشدد کیا جس سے  محمد غفور  موقع پر ہلاک ہوگیا جبکہ محمد جاوید شدید زخمی ہوگیا ذرائع کے مطابق معاملہ پرانا غیرت کا  ہو سکتا ہے تاہم اطلاع ملنے پر مقامی تھانہ نوشہرہ جدید کے ایس ایچ او مسلم ضیاء اپنی پولیس پارٹی کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور ہلاک ہونے والے محمد غفور کی نعش اور زخمی محمد جاوید کو آر ایچ  سی مبارکپور منتقل کر کے قانونی کارروائی کا آغاز کرتے ہوئے ملزمان کی گرفتاری کے لیے ٹیم تشکیل دے دی ہے۔چک نمبر 582 ٹی ڈی اے کے لوگوں نے نہر میں یتیرتی نعش دیکھ کر ہو لیس تھانہ چوک سرور شہید کو اطلاع کی جس پر پولیس اور ریسکیو 1122 کی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں اور نامعلوم لاوارث نعش کو باہر نکال کر ہسپتال منتقل کیا لاش کی شناخت کے لیے تھانہ چوک سرور شہید فون نمبر 0662210004یا اے ایس آئی ناصر عباسی 0306 6394237پر رابطہ کیا جا سکتا ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -