مافیا سرگرم،غریب خواتین کی رقوم ہتھیانے کاانکشاف

 مافیا سرگرم،غریب خواتین کی رقوم ہتھیانے کاانکشاف

  

چوک پرمٹ (نمائندہ پاکستان) مظفرگڑھ میں عرصہ دراز سے جعلی فنگر پرنٹ سکینڈل منظر عام پر آ رہے ہیں جس سے بیوہ یتیم غریب مسکین جو بینظیر انکم سپورٹ (بقیہ نمبر36صفحہ6پر)

پروگرام میں مستحق خواتین افراد ہیں جن کو گھر کی کفالت کے لئے حکومت کی جانب سے مالی امداد فراہم کی جاتی ہے خواتین کو علم بھی نہیں ہوتا انکی رقم مختلف بینک اے ٹی ایم سے ٹرانزیکشن ہوجاتی ہے یا پھر کسی ایچ بی ایل کنکٹ کی ڈیوائس سے لیکن سادہ لوح خواتین کو کہا جاتا ہے کہ آپ کی رقم نہ نکلوانے کی وجہ سے حکومت نے واپس اٹھالی ہے حالانکہ حکومت کی جانب سے ایسا کوئی بھی سسٹم موجود نہیں ہے حالیہ فراڈ میں الشیخ کمیونیکشن میر ہزار خان کے اونر جن کے پاس مستحق خواتین کو رقم کی ترسیل کے لئے ایچ بی ایل کنکٹ کی ڈیوائس ہے (ر بی بی) جو ڈمر والہ کے نواحی گاں میں رہائش پزیر ہے دنیا فانی میں نہیں رہیں وفات پا گئی ہیں لیکن مافیا نے عزاب قبر کو دعوت دیتے ہوئے مر جانے والی خاتون کی بی آئی ایس پی کی امدادی رقم بوگس فنگر پرنٹ کے زریعے نکال لیا گیا جب لواحقین کو علم ہوا تو بات شور مچ جانے پر لواحقین کو امدادی رقم جو فراڈ کے زریعے نکالی گئی رقم واپس کر کے چپ کرا دی گئی جبکہ ایسا سینکڑوں خواتین زندہ کیساتھ بھی ہو رہا ہے جو رقم کے حصول کے لئے جاتی ہیں تو آگے سے ٹرانزیکشن پہلے سے ہو چکی ہوتی ہے ہمارے زرائع کیمطابق جعلی فنگر پرنٹ بنانے سے لیکر رقم کے حصول تک نعیم بابو زیڈ ایم ایچ بی ایل کنکٹ مظفرگڑھ، الطاف شاہ بی ڈی او، نے ناصر اور باقر پل گدارہ کے رہائشی نادرہ افسران کی ملی بھگت سے جعلی فنگر پرنٹ بنواتے ہیں جو خود بھی فراڈ کر کے کروڑوں کی رقم کا فراڈ کرتے ہیں جبکہ آگے متعدد چیلوں یوسف میرانی جھگی والہ،عرفان الطاف شجرا میر ہزار و دیگر بڑے نیٹ ورک پر مشتمل گینگ بنا رکھا ہے جو امدادی رقم کا کروڑوں میں فراڈ کر رہے ہیں انتظامیہ کے تمام تر علم میں ہونے کے باوجود بھی چپ سادھ رکھی ہے اس موقع پر شہریوں ملک یوسف،کاشف خان، ودیگر  نے شدید احتجاج کرتے ہوئے ایف آئی اے کے سمیت اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ کروڑوں کا فراڈ کرنے والے گروہ کو گرفتار کر کے تحقیقات کی جائیں قرار واقعی سزا دی جائے تاکہ یہ فراڈ کا سلسلہ بند ہو سکے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -