ممتاز مسلم سکالر ادارہ تحقیقات اسلامی کے سابق جنرل ڈاکٹر ظفر اسحاق ڈار انصاری انتقال کر گئے

ممتاز مسلم سکالر ادارہ تحقیقات اسلامی کے سابق جنرل ڈاکٹر ظفر اسحاق ڈار ...

 لاہور(خصوصی رپورٹ ) ممتاز مسلم سکالر بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے ادارہ تحقیقات اسلامی کے سابق ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ظفر اسحاق انصاری 84 سال کی عمر میں اتوار کے روز انتقال کر گئے انا للہ وانا الیہ راجعون،ان کی نماز جنازہ بعد نماز عصر فیصل مسجد میں ادا کی گئی، امامت بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے صدر ڈاکٹر یوسف محمد الدویش نے کی ،نماز جنازہ میں بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے اساتذہ و طلباء کے علاوہ ممتاز علمی و ادبی شخصیات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ بعد ازاں انہیں سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں ایچ الیون قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا ۔مرحوم نے سوگواران میں دو بیٹے چھوڑے ہیں۔مرحوم ڈاکٹر ظفر گذشتہ چار پانچ بر س سے ڈائیلاسز پر تھے، تاہم پیرا نہ سالی کے باوجود ہمیشہ نماز جمعہ کی ادائیگی کے لئے باقاعدگی سے فیصل مسجد آتے ۔انہیں مولانا سیدابوالاعلیٰ مودودی کی قرآن کی تفسیر تفہم القرآن کا انگریزی ترجمہ کرنے کا اعزاز بھی حاصل تھا وہ ممتاز تحقیقی مجلہ اسلامک سٹڈیز کے بانی ایڈیٹر تھے ، ان کا لکھا گیا امام ابو حنیفہ کی شخصیت اور کارناموں پرآرٹیکل انسائکلو پیڈیا آف بر ٹینکا میں شامل کیا گیا۔ اپنے امریکہ وکینیڈا قیام کے دوران انہوں نے انٹر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف اسلامک تھاٹ کی بنیاد رکھی اس ادارہ کو آج بھی امریکی مسلمانوں کا نمائندہ ادارہ ہونے کا اعزاز حاصل ہے، ان کے پاکستان اور بیرون ملک شاگردوں کی تعداد سینکڑوں میں ہے وہ متعد د کتابوں کے مصنف اور ان کے ملکی و غیر ملکی جرائد میں مضامین بڑی تعداد میں شائع ہو ئے انہوں نے اسلامی علوم اور بین المذاہب مکالمے پر بین الاقوامی کانفرنسوں میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ مرحوم ظفر اسحاق انصاری ایک علمی خاندان سے تعلق رکھتے ہیں، ان کے والد مرحوم مولانا ظفر احمد انصاری آل انڈیا مسلم لیگ کے اسسٹنٹ جنرل سیکرٹری رہے ،وہ تحریک پاکستان کے ممتاز رہنماؤ ں میں شامل تھے۔ ظفر اسحاق انصاری27 دسمبر1932 کو آلہ آباد میں پیدا ہوئے۔انہوں نے ایم اے کراچی یونیورسٹی سے کیااور پی ایچ ڈی کی ڈگری کینیڈا کے ایک ادارے سے حاصل کی۔زمانہ طالب علمی میں اسلامی جمعیت سے وابستہ رہے،جماعت اسلامی کے نائب امیر پروفیسر خورشید احمد ،خرم جاہ مراد،ڈاکٹر منظور احمد ،ڈاکٹر اسرار احمد سمیت ملک کی نامور تعلیمی اور علمی شخصیات ہم عصر تھیں،ڈاکٹر انصاری انگریزی اور اردو کے علاوہ عربی، فارسی، فرانسیسی اور جرمن زبانوں پر بھی دسترس رکھتے تھے۔ وہ1988 سے 2008 تک اسلامک ریسرچ انسٹیٹیوٹ ، بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے ڈائریکٹر جنرل کے طور پر کام کر تے رہے،بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آبادکے نائب صدر اور صدر بھی رہے،اپنے آخری سانس تک انہوں نے یونیورسٹی سے تعلق برقرار رکھا وہ ان دنوں ایمرطیس پروفیسر کے طور پر کام کر رہے تھے ۔انہوں نے اپنی وفات سے چند ماہ قبل یونیسکو کا اہم پراجیکٹ دی فاؤنڈیشن آف اسلام مکمل کیاجماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سمیت ملک بھر کے دینی اور تعلیمی حلقوں نے ظفر اسحاق انصاری کی وفات پر ان کے لواحقین سے گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے ڈاکٹر انصاری کی موت کو ایک ناقابل تلافی علمی نقصان قرار دیا ۔

مزید : صفحہ اول