پیپلزپارٹی اور تحریک انصاف نے حکومتی خط مسترد کر دیا ،خورشید شاہ کاانٹرنیشنل فرانزک آڈٹ کا مطالبہ ،اپوزیشن ٹرم آف ریفرنس مل بیٹھ کر بنائے ،شاہ محمود

پیپلزپارٹی اور تحریک انصاف نے حکومتی خط مسترد کر دیا ،خورشید شاہ ...
پیپلزپارٹی اور تحریک انصاف نے حکومتی خط مسترد کر دیا ،خورشید شاہ کاانٹرنیشنل فرانزک آڈٹ کا مطالبہ ،اپوزیشن ٹرم آف ریفرنس مل بیٹھ کر بنائے ،شاہ محمود

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے پانامہ لیکس کے معاملے پر حکومتی خط کو مسترد کرتے ہوئے انٹرنیشنل فرانزک آڈٹ کا مطالبہ کیا ہے ۔قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی کے ہمرا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے وزیر اعظم کی تحقیقات ہوں اور پھر کسی اور کی تحقیقات ہو ،حکومتی خط بے سود ہے معاملہ عالمی سطح کا ہے اس لئے انٹرنیشنل فرانزک آڈٹ کا مطالبہ کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ 1947سے احتساب شروع ہوا تومکمل ہونے میں 100سال لگیں گے ،حکومت نے ہماری مشاورت کے بغیر ٹی اوآرز بھیجے ۔

پانامالیکس:حکومت نے مخالفین سے نمٹنے کیلئے حکمت عملی طے لرلی

قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے مزید کہا کہ دو مئی کو اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ اجلاس بلالیا ہے ،اپوزیشن جماعتوں کا اجلاس اعتزازاحسن کے گھرپرہوگا،سپریم کورٹ باراوردیگرجماعتوں کوبھی مدعوکیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں آیندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے،ٹرمزآف ریفرنس دیکھ کرشکوک وشبہات میں اضافہ ہوا۔انہوں نے کہا تحریک انصاف کے ساتھ ون پوائنٹ ایجنڈےپربات چیت ہوئی،یہ ون پوائنٹ ایجنڈاپاناما لیکس کی تحقیقات ہے۔

جنگلات کا تحفظ ہماری بقاء، درخت کاٹنے والے آف شور کمپنیاں رکھنے والوں سے بڑے مجرم ہیں: عمران خان

دوسری جانب تحریک انصاف کے رہنماشاہ محمود قریشی نے کہا کہ کمیشن کے ٹی اوآرزکو مسترد کرتے ہیں،اپوزیشن کوبیٹھ کرٹرم آف ریفرنس بنانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ حکومتی پراپیگنڈا کو کامیاب نہیں ہونے دینگے ،پیپلزپارٹی اور ہمارا موقف ایک ہے ۔انہوں نے کہا کچھ حکومتی لوگ تفریق پیدا کرنا چاہتے ہیں ،سندھ کی عوام بھی کرپشن،پاناما لیکس کے بارے میں مضطرب ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں