32ہزار آسامیاں خالی‘ پیپکو کی کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی کی سفارش

32ہزار آسامیاں خالی‘ پیپکو کی کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی کی سفارش

  



ملتان(سٹاف رپورٹر)بجلی کمپنیو ں میں 32ہزار آسامیاں خالی ہونے سے مسائل گھمبیر ہو گئے ۔ پیپکو نے کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی کی سفارش کر دی ۔ معلوم ہوا ہے کہ پاکستان الیکٹرک (بقیہ نمبر46صفحہ7پر )

پاور کمپنی(پیپکو)نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرانے کے لئے و زارت توانائی پاور ڈویژن کوپرائیویٹائزیشن کمیشن سے رجوع کرنے کی سفارش کردی۔جنرل منیجر ہیومن ریسورس پیپکو کی جانب سے وزارت توانائی پاور ڈویژن اسلام آباد کو لکھے گئے مراسلہ میں بتایا گیا ہے کہ اس وقت بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں 32 ہزار آسامیاں خالی ہیں جن میں 22 ہزار آسامیاں انتہائی اہم نوعیت کی ہیں۔ان کمپنیوں کے ملازمین اڑھائی کروڑ صارفین کو بجلی کی فراہمی میں دن رات مصروف ہیں۔ بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کا آپریشنل اور مینٹی نینس سسٹم تاحال مینول ہے۔ جس سے سخت موسمی حالات میں تربیت یافتہ مین پاور کے بغیر 24 گھنٹے آپریشنل رکھنا ممکن نہیں ہے۔ موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے پرائیویٹائزیشن کمیشن سے درخواست کی جائے کہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے ہیومن ریسورس کی جانب سے سال 16۔2015ء میں کنٹریکٹ پر بھرتی کئے گئے ملازمین کو مستقل کردیا جائے۔ تاہم صرف وہی کنٹریکٹ ملازمین مستقل کئے جائیں جن کی پرفارمنس ضرورت کے معیار پر پورا اترتی ہوں۔ واضح رہے کہ میپکو پیغام یونین نے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرانے کے لئے لاہور میں دھرنا بھی دیا تھا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...