صدر ٹرمپ کی تارکین وطن پالیسی سے اختلاف ہے: گورنر میری لینڈ

صدر ٹرمپ کی تارکین وطن پالیسی سے اختلاف ہے: گورنر میری لینڈ

  



واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) میری لینڈ ریاست کے گورنر لیری ہوگن نے حکمران ریپبلکن پارٹی سے تعلق کے باوجود صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تاریکن وطن سے متعلق پالیسیوں سے اختلاف کرتے ہوئے کہا ہے ہم انہیں تبدیل کرانے کی کوشش جاری رکھیں گے، وہ گزشتہ رو ز بالٹی مور میں یونائیٹڈ میری لینڈ مسلم کونسل کی طرف سے خصوصی ظہرانے میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کررہے تھے ،تقریب کا بنیادی مقصد ریاست میں مختلف اسلامی مراکز کی خدمات کا اعتراف اورمراکز کے سربراہوں کو گورنر کی جانب سے تعریفی شیلڈز پیش کرناتھا ، تقریب میں امریکہ میں پاکستانی سفیر اعزاز احمد چودھری نے بھی خطاب کیااوراس امر پر مسرت کا اظہار کیا کہ پاکستانی امریکن کمیونٹی ریا ست میری لینڈ کی ترقی و فلاح کیلئے سرگرم کردار ادا کر رہی ہے۔قبل ازیں کونسل کے صدر رضوان صدیقی نے اپنے خیر مقدمی کلمات میں شر کا ء کو بتایا اس وقت پاکستانیوں سمیت میری لینڈ میں موجود مسلمانوں کی تعداد ساڑھے تین لاکھ ہے جن میں ڈاکٹر انجینئر اور دیگر اہم پروفیشنلز کی بھاری تعداد شامل ہے، یہ مسلم کمیونٹی نہایت پر امن طریقے سے امریکی سوسائٹی میں اہم کردار ادا کررہی ہے، اسلئے وفاقی اور خصوصاً ریا ستی حکومت کو ان کے مسائل حل کرنے پر خصوصی توجہ دینی چاہئے، گورنر ہوگن نے اپنے خطاب میں تسلیم کیا ریاست میں موجود مسلم کمیونٹی ر یا ست کی معیشت کیلئے ریڑھ کی ہڈی ہے جن کا ریاست کی ترقی میں بہت اہم کردار ہے۔ اس کمیونٹی کے تعلیم یافتہ پروفیشنلز سرکاری و غیر سر کا ری اداروں میں اہم عہدوں پر متعین ہیں جن کی صلاحیتیں ریاست کا اہم اثاثہ ہے۔اس موقع پر بالٹی مور کے ممتاز پاکستانی تاجر شہباز خان نے نما ئند ہ روزنامہ پاکستان سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ریاست کے اسلامی مراکز اور مسلم کونسل میں پاکستانی کمیونٹی سب سے زیادہ سرگرم اور ریاستی سرگرمیوں میں ان کا کردار بہت نمایاں ہے۔ گورنر ہوگن نے خاص طور پر منٹگمری کاؤنٹی کے اسلامی مرکز مسلم کمیونٹی سنٹر( ایم

سی سی) کے تحت قائم کلینک کی سماجی خدمات کی بہت تعریف کی جہاں میڈیکل انشورنس سے محروم افراد کا مفت علاج کیا جاتا ہے۔ اس تقر یب میں ریاست کے لیفٹیننٹ گورنر بائیڈ رتھر فورڈ، سینئر کرس وان ہولن، کانگریس میں اینڈرے کارلن، جان سربانس اور ڈچ پرس برگر اور اہم سرکاری عہدیدار اور مسلم کمیونٹی کے چیدہ چیدہ لیڈر بھی شریک ہوئے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...