اپنی پوری زندگی عدلیہ کی آزاد ی کیلئے صرف کی ،دانیال عزیز

اپنی پوری زندگی عدلیہ کی آزاد ی کیلئے صرف کی ،دانیال عزیز

  



اسلام آباد(آن لائن)سپریم کورٹ میں وفاقی وزیردانیال عزیزکیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت تین مئی تک ملتوی کردی گئی ہے، دانیال عزیز نے عدالت کے روبرو موقف اختیار کیا کہ اپنی پوری زندگی عدلیہ کی آزادی کیلئے صرف کی، توہین عدالت کے الزام سے انکارکرتا ہوں۔منگل کے روز سپریم کورٹ میں وفاقی وزیر دانیال عزیز کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی، دوران سماعت وکیل صفائی نے نجی ٹی وی کے پروڈیوسرکو بطور گواہ پیش کیا، وکیل صفائی نے گواہ سے پوچھا کہ کیا 19 دسمبر 2017 ء کو ڈان ٹی وی میں چلنے والا ویڈیو کلپ ایڈیٹ ہے؟ کیا اسکی تاریخ، وقت اور جگہ بتا سکتے ہیں؟ گواہ نے بتایا کہ فوٹیج 19 دسمبراورپنجاب ہاؤس کی ہے۔دانیال عزیز کے وکیل نے گواہ سے پوچھا کہ یہ ریکارڈنگ کسی نجی فنکشن کی ہے ؟کیا دانیال عزیز یا کسی اور نے اس فنکشن کو کور کرنے کیلئے آپ کو کہا تھا؟ گواہ نے جواب دیا کہ ایونٹ کورکرنے کا نہیں کہا گیا۔ جسٹس شیخ عظمت سعید بولے یہاں عدالت میں موجود صحافیوں سے بھی پوچھ لیں ،کیا انہیں یہاں کسی نے مدعو کیا ؟ جس پرکمرہ عدالت میں قہقہے گونج اٹھے، دانیال عزیزنے تصدیق کی کہ 8 ستمبر 2017 ء کی پریس کانفرنس اور15 دسمبر 2017 ء کونیوٹی وی پرنشرہونیوالا بیان ان کا ہے تاہم 19 دسمبر 2017 کو نجی چینل پر نشر ہونیوالے اپنے بیان کے بارے میں حتمی نہیں کہہ سکتا ، کیونکہ اس پر بیپ ہے، دانیال عزیزبولے کہ اپنی پوری زندگی عدلیہ کی آزادی کیلئے صرف کی، توہین عدالت کے الزام کا انکار کرتا ہوں ، بعد ازاں عدالت نے کیس کی مزید سماعت 3 مئی تک ملتوی کردی۔

مزید : علاقائی


loading...