پاکستان میں پایا جانے والا وہ پرندہ جو اللہ کی حمدو ثنا کرتا ہے،اسے پالنے والے اس موقع پر کیا کرتے ہیں یہ جان کر آپ کو ان کی بدقسمتی پرافسوس ہوگا

پاکستان میں پایا جانے والا وہ پرندہ جو اللہ کی حمدو ثنا کرتا ہے،اسے پالنے ...
پاکستان میں پایا جانے والا وہ پرندہ جو اللہ کی حمدو ثنا کرتا ہے،اسے پالنے والے اس موقع پر کیا کرتے ہیں یہ جان کر آپ کو ان کی بدقسمتی پرافسوس ہوگا

  



لاہور(ایس چودھری )قرآن و احادیث اس بات کی گواہی دیتے ہیں کہ دنیا کی ہر شے شجر و حجر چرند پرند بھی اللہ کی حمد و ثنا کرتے ہیں ۔اگرچہ انسان کو اسکا ادراک نہیں ہوپاتا حالانکہ وہ غور سے کبھی قدرت کی ہر مخلوق کا مشاہدہ کرے تو ہر کسی میں اللہ کی حمدو ثنا دکھائی دے گی ۔کئی پرندوں کو تو یہ خوبی حاصل بھی ہے کہ وہ جب بولتے ہیں تو ان کے انداز سے اللہ کی بڑائی بیان ہوتی سنائی دیتی ہے۔ایسی خوبیاں کالے تیتر میں پائی جاتی ہیں ۔یہ پرندہ بہت نایاب ہوگیا ہے،جنگلوں اور باغوں میں خال خال ہی ملتا ہے بہت سے لوگوں نے اسکو شوقیہ پال رکھا ہے ۔وہ اسکو پنجرے میں بند کرکے اسکو چہچہاتے سنتے ہیں اور یہ بھی جانتے ہیں کہ کالا تیتر جب چہچہا رہا ہوتا ہے تو اسکی آواز سبحان اللہ سبحان سے مشابہ ہوتی ہے۔مگر انہیں نصیب نہیں ہوتا کہ وہ اللہ کے اس مظاہر سے سبق حاصل کرکے خود بھی تسبیح کیا کریں ۔وہ کالے تیتر لڑانے میں لگے رہتے اور اس پر جوا بھی کھیلتے ہیں یا پھر شکار کے لئے اسکوبطور چارہ ساتھ رکھتے ہیں۔

تیتر کی اپنی نفسیات ہے ،اسکو مکارپرندہ بھی کہا جاتا ہے ۔اس بارے میں ضلع میانوالی کی نامور شخصیت پروفیسر منور علی ملک نے لکھا ہے کہ داودخیل کے مرحوم حاجی امیرقلم خان امیرے خیل اس علاقے میں تیتر کے سب سے مشہورومعروف شکاری تھے۔ تیتر دوقسم کا ہوتا ہے- ایک کالا تیتر جو شوقین لوگ گھروں میں پالتے ہیں ،کہتے ہیں یہ بہت برکت والا پرندہ ہے- اپنے مخصوص انداز میں بولتا ہے تو اس کی آواز کی گونج دور دور تک سنائی دیتی ہے – اس کی بولی ایسی ہے جیسے کہہ رھا ہو “حق تیر ی قدرت “ یا ”سبحان تیری قدرت“ دوسری قسم کا تیتر سفید تیتر کہلاتا ہے۔ سفید اس لیے کہلاتا ہے کہ یہ سیاہ نہیں ہوتا – ویسے یہ خاکستری رنگ کا ہوتا ہے- داو¿دخیل کے جھل میں زیادہ تر یہی تیتر ملتا ہے- تیتر کی ایک عادت یہ ہے کہ یہ اپنے آپ کو علاقے کا بادشاہ سمجھتا ہے- اپنے علاقے میں کسی دوسرے تیتر کو برداشت نہیں کر سکتا – اسی لیے بعض شکاری ایک پنجرے میں بند تیتر ساتھ لے جاتے ہیں – پنجرے والا تیتر جب بولتا ہے تو علاقے کا بادشاہ تیتر اپنے اس رقیب کو مار بھگانے کے لیے گولی کی طرح اڑتا ہوا فوراً وہاں پہنچتا ہے اور شکاری کی بندوق سے نکلی ھوئی گولی کا شکار ہو جاتاہے۔ تیتر ھمیشہ اڑتے ہوئے ہی شکار ہوتا ہے۔ بیٹھا ہو تو ایسا مکار ہے کہ نظر ہی نہیں آتا“

مزید : روشن کرنیں


loading...