کراچی سے گوادر جاتے ہوئے راستے میں کون کون سے تفریحی مقامات آتے ہیں اور یہاں کیا کچھ کھایا پیا جاسکتا ہے ؟ سی پیک میں دلچسپی رکھنے والوں کیلئے انتہائی دلچسپ خبرا ٓگئی

25 اپریل 2018 (15:42)

کراچی /گوادر(ڈیلی پاکستان آن لائن)سی پیک میں دلچسپی رکھنے والوں کیلئے انتہائی دلچسپ معلومات آ گئی ہیں جن کے ذریعے وہ کراچی سے گوادر جاتے ہوئے نہ صرف اپنا سفر مکمل کریں گے بلکہ اپنے سفر سے لطف اندوز ہو سکیں گے ۔پاکستان کے معاشی مرکز کراچی سے گوادر کا زمینی راستہ طویل ضرور ہے لیکن انتہائی دلچسپ اور خوبصورت مقامات سے بھر پور ہے ۔اس سفر میں آپ نہ صرف اپنی منزل پر پہنچ سکتے ہیں بلکہ انتہائی خوبصورت علاقوں کی سیروتفریح کے ساتھ سفر کا مزہ دوبالا کر سکتے ہیں ۔

کراچی سے گوادر کا سفر 650کلو میٹر زمینی راستے پر مشتمل ہے۔جو کہ تقریباََ7گھنٹوں میں طے کیا جا سکتا ہے۔کراچی سے 90 کلو میٹر کا فاصلہ طے کرکے زیرو پوئنٹ سے مکران کوسٹل ہائی وے پر سفر کا آغاز ہو جاتا ہے۔کنڈ ملیر آتا جہاںپانی میں ڈولفن مچھلیوں کو دیکھا جا سکتا۔بزی پاس آتا جو کہ بلند ترین مقام ہے۔بزی پاس کے بعد پہاڑی سلسلہ شروع ہو کر پرنس آف ہوپ کا علاقہ آ جاتا۔

61سو مربع کلو میٹر پر مشتمل پا کستان کا دوسرا بڑا ہنگول نیشنل پارک بھی اسی راستے میں ہے جو تفریح کیلیے قابل ستائش سمجھا جاتا ہے۔اوڑ ماڑا ٹاﺅن کے علاقے کی چٹانیں دیکھنے کے قابل ہیں ۔ماہی گیری کے شوقینوں کیلیے پسنی کا علاقہ بہت مشہور ہے ۔پسنی کے بعد منزل کا اختتام گوادر پر ہوتا جس پر پاکستانیوں کی ہی نہیں بلکہ دنیا کی نظریں جمی ہوئی ہیں۔

کراچی سے گوادر کے راستے کے تفریحی مقاموں کی معلومات کیلیے ویڈیو دیکھیں۔

مزیدخبریں