جڑواں برطانوی بہنوں نے دبئی میں غصے میں عرب خاتون سے ایسی بات کہہ دی کہ دونوں کو پکڑ لیا گیا، کئی برس جیل میں گزارنا پڑسکتے ہیں کیونکہ۔۔۔

جڑواں برطانوی بہنوں نے دبئی میں غصے میں عرب خاتون سے ایسی بات کہہ دی کہ دونوں ...
جڑواں برطانوی بہنوں نے دبئی میں غصے میں عرب خاتون سے ایسی بات کہہ دی کہ دونوں کو پکڑ لیا گیا، کئی برس جیل میں گزارنا پڑسکتے ہیں کیونکہ۔۔۔

  



دبئی(مانیٹرنگ ڈیسک)متحدہ عرب امارات میں بسااوقات ایسے کاموں پر کڑی سزائیں دے دی جاتی ہیں جو باقی دنیا میں معمولی خیال کیے جاتے ہیں۔ اس کی نئی مثال ان برطانوی جڑواں بہنوں کی ہے جنہیں عرب خواتین کو گالیاں دینا مہنگا پڑ گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق الینا اور ساشا پارکر بنیادی طور پر لندن کی رہائشی ہیں جو دبئی میں الصفر اینڈ پارٹنرز میں ملازمت کرتی تھیں۔ گزشتہ دنوں وہ انتہائی مختصر کپڑوں میں ساحل سمندر پر موجود تھیں اور وہاں غل غپاڑہ کر رہی تھیں۔ وہاں موجود دیگر لوگوں نے پولیس کو اطلاع دے دی۔

رپورٹ کے مطابق پولیس کو شبہ ہوا کہ ان دونوں نے شراب پی رکھی ہے چنانچہ وہ انہیں ٹیسٹ کے لیے لیجانے لگی تو ان دونوں نے مزاحمت شروع کر دی۔ خاتون پولیس آفیسر نے انہیں زبردستی گاڑی میں بٹھایا جس پر ان دونوں نے عرب خواتین کو برا بھلا کہنا شروع کر دیا، کیونکہ وہ خاتون پولیس آفیسر عرب تھی۔ پولیس نے اس روئیے پر ان دونوں 37سالہ بہنوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کر دیا ہے۔خاتون پولیس آفیسر نے عدالت میں گواہی دیتے ہوئے کہا ہے کہ الینا اور ساشا نے اس پر حملہ بھی کیا اور اپنے ناخنوں سے اس کے ہاتھوں پر خراشیں ڈال دیں۔ مقدمے کی کارروائی جاری ہے اور انہیں ممکنہ طور پر تین، تین سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔ 

مزید : عرب دنیا