وفاقی کابینہ کے اجلاس میں نیب کو ریکارڈ کی فراہمی کے طریقہ کارکے لئے کمیٹی بنا دی گئی

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں نیب کو ریکارڈ کی فراہمی کے طریقہ کارکے لئے کمیٹی ...
وفاقی کابینہ کے اجلاس میں نیب کو ریکارڈ کی فراہمی کے طریقہ کارکے لئے کمیٹی بنا دی گئی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں نیب کو ریکارڈ کی فراہمی کا طریقہ وضع کر نے کیلیے خصوصی کمیٹی بنادی جس کے سربراہ بیرسٹر ظفراللہ ہوں گے۔

نجی چینل ”جیونیوز“کا اپنے ذرائع کے حوالے سے دعوی ہے کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں نیب کے حوالے سے شدید تحفظات کا اظہا ر کیا،ان کا کہنا تھا کہ نیب نوٹسز کے خوف سے سیکرٹریز اورحکومتی مشینری نے کام چھوڑ رکھاہے،ایگزیکٹو کو خوف زدہ کیا جائےگاتو فیصلے کون کرےگا؟اس صورتحال سے ملکی ترقی کی پالیسیوں کا نقصان ہورہاہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ضروری نہیں نیب کی کہی ہوئی ہربات درست ہو،ایگزیکٹو کواختیار ہے کہ وہ فیصلہ کرے،اگر ایگزیکٹو کے10 فیصلوں میں سے5 غلط ہوتے ہیں تو انکودرست بھی انہوں نے ہی کرناہے۔انہوں نے کہا کہ نیب کااداروں سے ریکارڈ مانگنے کاکوئی طریقہ ہونا چاہیے ایسا نہیں ہونا چاہیے کہ جب چاہے کوئی ریکارڈ مانگ لیا جائے۔

وفاقی کابینہ نے نیب کا مختلف محکموں کے ا علیٰ عہدیداروں کاریکارڈ دینے کاخط مسترد کردیا۔

خیال رہے نیب نے پاک سٹیل،سوئی سدرن،مختلف محکموں کے ز یرتحقیقات افسران کا ریکارڈ مانگاتھا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...