گورنر پنجاب نے پروفیسر خالد مسعود کو پی ایچ ڈی کی ڈگری دی

گورنر پنجاب نے پروفیسر خالد مسعود کو پی ایچ ڈی کی ڈگری دی

  

لاہور(پ ر)گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے پروفیسر خالد مسعود گوندل کو میڈیکل ایجوکیشن میں پی ایچ ڈی کی ڈگری دی۔پروفیسر خالد مسعود گوندل کنگ ایڈ ورڈ میڈیکل کالج کے فارغ التحصیل ہیں۔ایم بی بی ایس کرنے کے بعد انہوں نے طب کے شعبہ سرجری میں کالج آف فزیشنز اینڈ سرجنز پاکستان سے ایف سی پی ایس کیاوہ رائل کالج آف فزیشنزگلاسگو(انگلینڈ) اور امریکن کالج آف سرجنز کے فیلو بھی ہیں۔وہ جنوبی ایشیاء کی قدیم تاریخی 160سالہ شاندار خدمات کی حامل طبی تحقیقی درسگاہ کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے مستقل وائس چانسلر ہیں۔کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے قریباً انیس ہزار سے زائد فارغ التحصیل ڈاکٹرز نہ صرف اندرون ملک بلکہ دنیا کے دیگر ممالک میں شعبہ طب میں اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی انڈر گرایجوایٹ کورسز کے ساتھ ساتھ طب کے شعبہ میں اعلیٰ ترین ڈگری پی ایچ ڈی کیلئے بھی ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان اور پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل سے منظور شدہ ہے۔

پروفیسر خالد مسعود گوندل سو سے زائد ملکی اور غیر ملکی سطح پر طبی تحقیقی مقالہ جات کے مصنف ہونے کے ساتھ ساتھ چالیس سے زائد کانفرنسز میں لیکچرز دے چکے ہیں۔جن میں سٹیٹ آف دی آرٹ لیکچرز بھی شامل ہیں۔ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان نے ان کو شعبہ سرجری کی طبی تحقیق کا فوکل پرسن مقرر کیا ہوا ہے۔اس کے ساتھ ساتھ وہ ہائرایجوکیشن کمیشن کے قومی طبی تحقیقی ایوارڈ کی نامزدگی کیلئے بطور جج بھی خدمات سر انجام دیتے رہے ہیں یہ ان چند طبی محقیقین میں شامل ہیں جنہوں نے میڈیکل ایجوکیشن میں ایم سی پی ایس-ایچ پی ای اور پی ایچ ڈی کی ڈگریاں بھی حاصل کی۔وہ شعبہ طب میں کارکردگی اور معیار تعلیم کو پرکھنے میں خاص دلچسپی اور مہارت رکھتے ہیں۔وہ امریکن کالج آف سرجنز کے سینئرانسٹرکٹر ممبر ہیں۔ ایڈوانسڑٹرامالائف سپورٹ پرگرام میں خصوصی مہارت رکھتے ہیں اور رائل کالج آف کینیڈ ا،انگلینڈ، آئر لینڈ،آسٹریلیا،امریکہ،خلیجی ممالک اور سارک ممالک میں طب کے شعبہ میں پاکستان کی نمائندگی کرنے کا اعزاز رکھتے ہیں۔کالج آف فزیشنز اینڈ سرجنز پاکستان اور کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی میں ای لاگ سسٹم متعارف کروانے کا سہرہ بھی پروفیسر خالد مسعود گوندل کے سر ہے۔بطور وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی میں اس کا طبی تحقیقی رسالہ اینلز آف ایف جے ایم یو پی ایم ڈی سی،سی پی ایس پی اور ایچ ای سی سے منظور کروایا۔ان کی شعبہ طب میں شاندار خدمات کے اعتراف میں ۳۲مارچ ۳۱۰۲?کو صدر اسلامی جمہوریہ ء پاکستان نے ان کو تمغہ امتیاز سے نوازا اور۵۱۰۲? میں حکومت پنجاب کی طرف سے اکیسویں سکیل میں ترقی دی گئی۔

کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی لاہور کے پہلے فارغ التحصیل مستقل وائس چانسلرکے طور پر طبی تعلیمی تحقیق کے فروغ کے ساتھ ساتھ ادارے کے ترقیاتی منصوبوں کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا۔

کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی میں بطور وائس چانسلر پی ایم ڈی سی اور ایچ ای سی پاکستان سے پی ایچ ڈی پروگرامزکو منظور کروایاہے۔کے ای ایم یو کے تحقیقی مجلہ اینلزآف کے ای ایم یو کو بھی منظور کروایااور ایچ ای سی میں ”وائی“ کیٹگری میں لائے اور بین الاقوامی بیس انڈیکسنگ ایجنسیز میں شامل ہے۔

پروفیسر خالد مسعود گوندل کو یہ ایک منفرد اعزاز بھی حاصل ہے کہ انہوں نے پہلی دفعہ کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کی شاندار تاریخ کو ایک کتاب کی شکل میں مرتب کیاہے۔جسمیں اسکی158 سالہ خدمات پر مفصل روشنی ڈالی گئی ہے۔

کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کا مریدکے ناروال روڈ پر نیو کیمپس کی تعمیر کا کام عنقریب شروع ہونے والا ہے اور اس کا پی سی ون حالیہ دنوں میں پروفیسر خالد مسعود گوندل کی زیر نگرانی تیار ہو کر حکومت پنجاب کے متعلقہ شعبہ میں جمع کروایا جاچکا ہے۔گرلز ھاسٹلز اور سٹرینتھننگ آف کے ای ایم یو کے پی سی فور فارمز بھی ان کی شبانہ روز محنت اور نگرانی میں جمع کروائے جا چکے ہیں۔حال ہی میں پروفیسر خالد مسود گوندل نے میڈیکل ایجو کیشن میں پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی جو کہ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے آج عطا کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -