لاک ڈاؤن کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے: سیاسی رہنما

  لاک ڈاؤن کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے: سیاسی رہنما

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سیاسی رہنماؤں نے کہاہے کہ لاک ڈاؤن کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ہے۔سیاسی رہنما مصطفی کمال، وسیم اختر اور حافظ نعیم الرحمن نے کراچی میں میڈیا سے گفتگو کے دوران ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن کو مزید سخت کرنے کی حمایت کی ہے، کراچی میں میڈیا سے گفتگو کے دوران کورونا وائرس سے بچاؤکے لیے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن کو آخری آپشن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگلے دوہفتے بہت اہم ہیں کہا ہے کہ ماہرین اور ڈاکٹرز کی رائے ماننے کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے۔مصطفی کمال نے کہاکہ وفاقی حکومت الگ بات کرتی ہے اور صوبائی حکومت الگ بات کرتی ہے۔ہمارے ہاں ابھی بحران شروع نہیں ہوا، اگر ہوا تو مسائل سے نہیں نمٹا جاسکتا۔انہوں نے مزید کہا کہ ڈیڑھ لاکھ سے زائد بلدیاتی نمائندے موجود ہیں، ضلعی سطح پر لوگوں کو آگاہ کرنے کی ضرورت ہے۔میئر کراچی وسیم اختر نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا ہے کہ ڈاکٹرز کی بات کو سنجیدگی سے لینا چاہیئے، لاک ڈاؤن پر عمل درآمد کے لیے علما کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔وسیم اختر نے کہا ہے کہ اگریہ وائرس مزید پھیل گیا تو اسپتالوں میں اتنی گنجائش نہیں ہے، لاک ڈاؤن پر عمل کیا جائے، دات گھر پر کی جاسکتی ہیں۔خدانخواستہ وائرس پھیلا تو وسائل نہیں ہیں۔دوسری جانب امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے جاری لاک ڈاؤن سے متعلق کہا ہے کہ حکومت سب کے گھر پر راشن پہنچا دے اور مکمل لاک ڈاؤن کر دے۔حافظ نعیم نے کہاکہ وفاق اور صوبے کی لڑائی کا سلسلہ کب تک رہے گا؟ سب کو آن بورڈ لے کر مشاورت سے فیصلہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرز کو بھی اپنے معاملات دیکھنے ہوں گے، خوف نہیں پھیلانا چاہئے، عوامی سطح پر بات کرنے سے خوف پھیلتا ہے، ڈاکٹرز مشورے حکومت کو دیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -