ملیریا خوفناک متعدد مرض‘ پاکستان میں سالانہ 10لاکھ کیس‘ رپورٹ

  ملیریا خوفناک متعدد مرض‘ پاکستان میں سالانہ 10لاکھ کیس‘ رپورٹ

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)پاکستان سمیت دنیا بھر میں ملیریا سے بچاؤ کا عالمی دن آج منایا جا ئے گا،اس دن کو منانے کا مقصد عوام میں ملیریا سے بچاؤ اور اس کے متعلق پیدا شدہ خدشات اور غلط فہمیوں کے متعلق آگاہی فراہم کرنا ہے،پاکستان کا شمار آج بھی ملیریا کے(بقیہ نمبر52صفحہ6پر)

حوالے سے دنیا کے حساس ترین ممالک میں کیا جاتا ہے۔ ملیریا اینو فلیس نامی مادہ مچھر کے ذریعے پھیلنے والا متعدی مرض ہے جس کا جراثیم انسانی جسم میں داخل ہو کر جگر کے خلیوں پر حملہ آور ہوتا ہے،اس مرض کی صحیح تشخیص نہ ہونے سے ہر سال دنیا بھر میں ملیریا کے 20 کروڑ جبکہ پاکستان بھر میں 10 لاکھ کیس رپورٹ ہوتے ہیں، پاکستان میں ملیریا دوسری عام پھیلنے والی بیماری ہے،پاکستان میں گلوبل فنڈ کے تعاون سے ملیریا کی تشخیص کے لیے 3 ہزار 155 سرکاری و نجی سینٹرز قائم کیے گئے ہیں جن کا مقصد رواں سال2020 تک ملیریا کے مکمل خاتمے کے ہدف کو پورا کرنا ہے،ملیریا سے زیادہ متاثرہ 66 اضلاع میں بلوچستان، سندھ، خیبر پختونخواہ، پنجاب اور فاٹا کے اضلاع شامل ہیں،طبی ماہرین کے مطابق بخار، کپکپی، سر درد، متلی، کمر اور جوڑوں میں درد ملیریا کی بنیادی علامات ہیں۔ طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ ملیریا کی بروقت تشخیص اور علاج نہ ہونے کی صورت میں یہ مرض جان لیوا ہو سکتا ہے،ماہرین طب کا کہنا ہے کہ صفائی ستھرائی کا مناسب خیال رکھنے اور مندرجہ ذیل احتیاطی تدابیر اختیارکرنے سے ملیریا سے بچاؤ ممکن ہے۔

ملیریا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -