چین کی غیر فعال کروناوائرس ویکسین دوسرے مرحلے کے کلینیکل ٹرائل میں داخل

چین کی غیر فعال کروناوائرس ویکسین دوسرے مرحلے کے کلینیکل ٹرائل میں داخل
چین کی غیر فعال کروناوائرس ویکسین دوسرے مرحلے کے کلینیکل ٹرائل میں داخل

  

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)چین کی غیرفعال نوول کروناوائرس ویکسین کلینیکل ٹرائل کے دوسرے مرحلے میں داخل ہو گئی ہے،اس بات کا اعلان ویکسین بنانیوالوں نے کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق چائنہ نیشنل فارماسوٹیکل گروپ(سائنوفارم)کے ماتحت ووہان انسٹیٹیوٹ آف بائیولوجیکل پروڈکٹس اور چائنہ اکیڈمی آف سائنسز کے تحت ووہان انسٹیٹیوٹ آف وائرولوجی کے ذریعے تیار کی جانیوالی ویکسین کے کلینیکل ٹرائلز 12 اپریل سے شروع ہوئے ہیں۔سائنوفارم نے اپنے اعلان میں کہا ہے کہ 96 افراد جنہیں عمر کے لحاظ سے تین گروہوں میں بانٹا گیا کو 23 اپریل تک کلینیکل ٹرائلز کے پہلے مرحلے میں ویکسین لگائی گئی۔ویکسین نے اب تک اچھی مدافعت کا مظاہرہ کیا ہے اور ویکسین لینے والے ابھی تک طبی نگرانی میں ہیں۔سائنوفارم کے مطابق غیر فعال شدہ ویکسین کے بے ترتیب، ڈبل بلائنڈ اور پلیسبو کنٹرولڈ کلینیکل ٹرائلز وسطی چین کے صوبے ہینان کے شہر جیاو ژو میں کیے جاتے ہیں، کلینیکل ٹرائل کے دوسرے مرحلے میں ویکسینیشن کے طریقہ کار پر توجہ دی جائیگی۔ویکسین کے کلینیکل ٹرائلز کے پہلے اور دوسرے دونوں مراحل کی نیشنل میڈیکل پروڈکٹس ایڈمنسٹریشن نے گرین چینل کے ذریعے منظوری دے دی ہے۔سائنوفارم نے کہا ہے کہ یہ ویکسین کلینیکل ٹرائل کے تیسرے مرحلے سے بھی گزرے گی اور کلینیکل ٹرائل کو مکمل ہونے میں تقریبا 1 سال لگ سکتا ہے اور آخر کار ویکسین کی حفاظت اور افادیت کے بارے میں نتیجے پر پہنچا جا سکتا ہے۔چین نے نوول کروناوائرس کے تین ویکسین امیدواروں کی کلینیکل ٹرائلز کے لئے منظوری دی ہے۔ آڈینو وائرس ویکٹر ویکسین دنیا کی پہلی نوول کروناوائرس ویکسین ہے جو کلینیکل ٹرائلز کے دوسرے مرحلے میں داخل ہو ئی ہے۔

مزید :

کورونا وائرس -