ڈی ایچ کیو ہسپتال سرگودھا، ایک سال میں ساڑھے 4سو خودکشی کیس

  ڈی ایچ کیو ہسپتال سرگودھا، ایک سال میں ساڑھے 4سو خودکشی کیس

  

سرگودھا(بیورو رپورٹ) پی ایم اے سرگودھا کے صدر ڈاکٹر سکندر حیات وڑائچ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پچھلے ایک سال میں تقریباً ساڑھے 4 سو خود کشی کے مریض ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال سرگودھا میں  لائے گئے۔ جن میں سے 316 مریضوں میں گندم میں رکھنے والی گولیاں کھا کر خود کشی کی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے لئے یہ ایک لمحہ فکریہ ہے کہ ایک سال میں اتنے زیادہ لوگوں نے خود کشی کی۔ جبکہ ان میں سے اکثریت نوجوان لڑکیوں اور لڑکوں کی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ گندم کی کٹائی کا سیزن شروع ہو چکا ہے اور انہوں نے پنجاب حکومت اور ضلعی حکومت سرگودھا سے مطالبہ کیا ہے کہ ان گولیوں کی سرعام فروخت پر فی الفور پابندی لگائی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں بحیثیت قوم خود کشی کی طرف مائل ان نوجوانوں کے بارے میں لائحہ عمل تیار کرنا ہو گا۔ تاکہ ہماری آنے والی نسل ذہنی و جسمانی‘ مکمل طور پر صحت مند ہو سکے۔ 

مزید :

صفحہ آخر -