جو پلاٹ لینا چاہتے ہیں ان کو پلاٹ دے دیں،چیف جسٹس پاکستان کے غیرقانونی تجاوزات کیس میں ریمارکس

جو پلاٹ لینا چاہتے ہیں ان کو پلاٹ دے دیں،چیف جسٹس پاکستان کے غیرقانونی ...
جو پلاٹ لینا چاہتے ہیں ان کو پلاٹ دے دیں،چیف جسٹس پاکستان کے غیرقانونی تجاوزات کیس میں ریمارکس

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں غیرقانونی تجاوزات کیس میں چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ جو پلاٹ لینا چاہتے ہیں ان کو پلاٹ دے دیں۔

نجی ٹی  وی چینل دنیا نیوز کے مطابق سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں غیرقانونی تجاوزات کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں  بنچ نے سماعت کی، چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ ایڈووکیٹ جنرل سندھ کیس کے بارے میں بریف کریں،عدالت میں نالہ متاثرین کا گزشتہ فیصلہ پڑھ کر سنایا گیا،ایڈووکیٹ جنرل نے کہاکہ تخمینے کیلئے پاکستان انجینئرنگ کونسل کو بھیجا گیا،چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ انجینئرنگ کونسل کو کب بھیجا گیا، ان سے اتنا سا کام نہیں ہورہا،وکیل متاثرین نے کہا کہ 4.2ملین روپے نالہ متاثرین کو دیئے جائیں،چیف جسٹس پاکستان نے استفسار کیا کہ پیسے کس نے دینے ہیں؟ وکیل نے جواب دیا کہ سندھ حکومت نے پیسے دینے ہیں،چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سندھ حکومت نے نہیں، عوام نے دینے ہیں۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے استفسار کیا کہ نالہ متاثرین کی تعداد کتنی ہے؟ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے جواب دیا کہ 6ہزار سے زائد متاثرین ہیں،نالوں پر غیرقانونی تعمیرات تھیں،چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ آپ متاثرین کو پلاٹ تو دے دیں،ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے کہاکہ ہم تو پلاٹ دینے کیلئے تیار ہیں،چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ جو پلاٹ لینا چاہتے ہیں ان کو پلاٹ دے دیں۔