امریکہ و اقوام متحدہ کی وارننگ کھو کھاتے، شمالی کوریا کا ایک اور بیلسٹک تجربہ

امریکہ و اقوام متحدہ کی وارننگ کھو کھاتے، شمالی کوریا کا ایک اور بیلسٹک ...

پیانگ یانگ(آن لائن)امریکا اور اقوام متحدہ کی وارننگ کو نظر انداز کرتے ہوئے شمالی کوریا نے ایک اور بیلسٹک میزائل کا تجربہ کردیا جبکہ امریکہ نے شمالی کوریا کی جانب سے آبدوز کے ذریعے بیلسٹک میزائل کے تجربے کی مذمت کی ہے۔شمالی کوریا کی خبر ایجنسی نے جوائنٹ چیفس آف سٹاف کے حوالے سے کہا ہے کہ میزائل سی آف جاپان میں ایک آبدوز سے داغا گیا۔ میزائل مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے پانچ بجے داغا گیا۔ شمالی کوریا نے میزائل کا تجربہ امریکا اور جنوبی کوریا کی مشترکہ فوجی مشقوں کے آغاز کے دو دن بعد کیا۔شمالی کوریا نے یہ تجربہ ایک ایسے موقع پر کیا ہے جب جاپان، چین اور جنوبی کوریا کے وزرائے خارجہ ٹوکیو میں ملاقات کر رہے ہیں۔امریکی حکام کے مطابق شمالی کوریا نے سنپو کے سمندری علاقے میں موجود آبدوز سے ’کے این 11‘بیلسٹک میزائل فائر کیا۔حکام کا کہنا ہے کہ میزائل نے تقریباً پانچ سو کلومیٹر کا فاصلہ طے کیا اور بحیرہ جاپان میں گر گیا۔جنوبی کوریا کی یونہپ نیوز ایجنسی کے مطابق بیلسٹک میزائل جاپان کی فضائی دفاع کی طے کردہ حدود کے اندر گرا۔شمالی کوریا جوہری ہتھیاروں کے تجربات کر چکا ہے اور اقوام متحدہ نے اس پر بیلسٹک میزائل کے تجربات پر پابندی عائد کر رکھی ہے تاہم حالیہ کچھ عرصے میں شمالی کوریا نے لگاتار میزائل کے ٹیسٹ کیے ہیں۔شمالی کوریا نے گذشتہ ماہ بھی بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا تھا جس کے بارے میں جنوبی کوریا کا کہنا تھا کہ یہ ناکام رہا۔امریکی محکمہ خارجہ نے میزائل تجربے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اپنے خدشات کا اظہار اقوام متحدہ میں کرے گا۔اس سے پہلے شمالی کوریا نے امریکہ اور جنوبی کوریا کی مشترکہ فوجی مشقوں پر خبردار کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ اس پر حملے کی مشق ہے اور اس کے نتیجے میں جزیرہ نما کوریا جنگ کے دہانے پر پہنچ سکتا ہے۔گذشتہ ماہ امریکہ اور جنوبی کوریا نے شمالی کوریا سے لاحق خطرات سے نمٹنے کے جدید ترین دفاعی میزائل نظام نصب کرنے کے منصوبے پر اتفاق کیا تھا۔

مزید : عالمی منظر


loading...