خیبر ایجنسی ، قبائلی مشران کا فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

خیبر ایجنسی ، قبائلی مشران کا فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کیخلاف ...

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ) خیبر ایجنسی قبائلی مشران نے باب خیبر پر فاٹاکو خیبر پختونخوامیں ضم کرنے کے فیصلے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ،الگ صوبہ یا فاٹا کونسل بنایا جائے، جرگہ سسٹم بحال ،قبائیلی حثیت برقرار رکھا جائے، ہمیں تھانہ کلچر ہرگز قبول نہیں، ایف سی ار میں ترامیم کرکے ظالمانہ شقوں کو ختم کیا جائے، ائی ڈی پیز کی باعزت واپسی تک کوئی فیصلہ قبول نہیں، قربانی دینے والے شہداء کے لواحقین سے فاٹا کے مستقبل کے بارے پوچھا جائے۔خیبرایجنسی کے سرکردہ ملکان و مشران نے فاٹا اصلاحات کے حوالے سے باب خیبر کے مقام پر احتجاجی مظاہر ہ کیا اس مظاہرے میں ملک ،ملک خالد خان آفریدی ،ملک عبدالرزاق آفریدی ،صلاح الدین، ملک اسرار،ملک اسماعیل ،ملک فیض اللہ جان، عادل رشتین، سیماب اور حاجی قوت خان سمیت کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ملکان نے بینر اٹھا رکھے تھے جس پر قبائیلی حثیت برقرار رکھا جائے، جرگہ سسٹم بحال رکھا جائے جیسے نعرے درج تھے۔ملکان نے مشترکہ طور پر مظاہر ین کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قائداعظم نے قبائیلیوں کو ریڑھ کی ہڈی پکارا تھا، پہلے فاٹا کے ائی ڈی پیز کو باعزت واپس اپنے گھروں کو بھیج دیا جائے ،ہم اپنے قبائیلیت پر ہرگز سمجھوتہ نہیں کرینگے، شہروں میں رہنے والوں کے بجائے اپنے فیصلے خود کرینگے،قبائیلیوں کے خلاف ہر شازش کو ناکام بنائینگے،ہجرت کرینگے لیکن کے پی کے میں شامل نہیں ہونگے،تھانہ کلچر اور عدالتی نظام ہر گز قبول نہیں کرینگے،ایف سی ار سے ظالمانہ شقوں کو ختم کرکے سارے ملک میں امن و امان کو برقرار کھنے کیلئے نافذ کیاجائے،جبکہ قربانی دینے والے شہدا ء کے لواحقین سے فاٹا کے مستقبل بارے پوچھا جائے ملکان نے وزیر اعظم ، صدر ، چیف آف ارمی سٹاف ، ڈی جی ائی ایس ائی ،گورنر کے پی کے اور کو رکمانڈرپشاور سے مطالبہ کیا کہ قبائیلی محب وطن ہیں اور ان پر فیصلے ٹھونسنے کے بجائے ان سے رائے لی جائے، کیونکہ قبائیلیوں نے ہر اڑے وقت میں اپنے پاک وطن کیلئے ہر قسم کی قربانی دی ہے اور ائندہ بھی ہر قسم کی قربانی کیلئے ہر دم تیار ہیں

مزید : کراچی صفحہ اول