ہائی وے ایم اینڈ آرڈویژن ساہیوال کو فنڈز کی کمی کا سامنا

  ہائی وے ایم اینڈ آرڈویژن ساہیوال کو فنڈز کی کمی کا سامنا

  

  لاہور(سپیشل رپورٹر)ہائی وے ایم اینڈ آر ڈویژن ساہیوال میں فنڈز نہ ہونے پر ٹھیکیداروں نے گزشتہ روز ہونے والے ٹینڈرز کا بائیکاٹ کر دیا،بعض ٹھیکیداروں کی جانب سے دوسری وجہ عناد یہ بھی بتائی گئی ہے کہ چیف انجینئر ہائی وے ایم اینڈ آر لاہور ندیم الدین نے ہر سکیم کے فنڈز جاری کرنے کے 4 فیصد کے حساب سے کمیشن لینا شروع کر رکھا ہے جس ڈویژن کے ٹھیکیدار کمیشن دے دیتے ہیں ان اضلاع کے ٹھیکیداروں کے کاموں کے فنڈز جاری کردیئے جاتے ہیں، چیف انجینئر ہائی وے ایم اینڈ آر لاہور کے آفس میں پنجاب بھر کے کچھ منظور نظر ٹھیکیدارفنڈز کے اجراء کے لئے کوشاں ہیں اور چیف انجینئر کے آفس میں میلے کا سماں ہے۔ ذرائع کے مطابق چیف انجینئر ہائی وے ایم اینڈ آر لاہور ندیم الدین، ڈائریکٹر ملک ابراہیم، ڈپٹی ڈائریکٹر اعجازِ اور سپرنٹنڈنٹ شاہد ٹھیکیداراروں سے بھاری کمیشن وصول کرکے انہیں سادہ کاغذ کی چٹیں تھماکر دفاتر سے غائب ہوجاتے ہیں جس سے ٹھیکیداراروں میں گہری تفتیش پائی جاتی ہے، باوثوق ذرائع یہ بھی بتاتے ہیں کہ پورے پنجاب کے ہائی وے ایم اینڈ آر کو حکومت نے ایک ارب اور 10کروڑ روپے سڑکوں کی مرمت کے لئے دئیے جس پر سیکرٹری سی اینڈ ڈبلیو پنجاب کے چہیتے چیف انجینئر نے فنڈز کی لوٹ سیل لگا دی ہے۔ باوثوق ذرائع کامزید کہناہے کہ ایکسیئن ہائی وے ڈویژن فیصل آباد نے مبینہ طور پر70 لاکھ روپے دے کر فیصل آباد ہائی وے ڈویژن میں پوسٹنگ کروائی ہے، اعلیٰ اتھارٹیز نے ہر کام کے منہ بولے ریٹس مقرر کررکھے ہیں۔

کمی کا سامنا

مزید :

صفحہ آخر -