سینیٹ اجلاس، اسلام آباد ہائیکورٹ، ہو میو پیتھک اور صوبائی موٹر وہیکل آرڈیننس ترمیمی بلز منظور

  سینیٹ اجلاس، اسلام آباد ہائیکورٹ، ہو میو پیتھک اور صوبائی موٹر وہیکل ...

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)سینیٹ نے اسلام آباد ہائی کورٹ ترمیمی بل 2020،یونانی آریو ویدک ہومیو پیتھک ترمیمی بل 2019ء اور صوبائی موٹروہیکل آرڈیننس ترمیمی بل 2020ء کثرت رائے سے منظور کرلیے، جبکہ ایوان بالا نے وفاقی دارالحکومت میں بچوں کیلئے علیحدہ لاک آپ بنانے، کوئٹہ، پشاو ر سے لارج ٹیکس پیئر کے دفاتر منتقل نہ کرنے کے حوالے سے قراردادیں بھی منظور کر لی، وفاقی دارلحکومت میں ڈیمز اور کنال سے متعلق اتھارٹی بنانے،اقلیتوں کے حقوق سے متعلق قانون سازی سمیت کئی بل بھی پیش کردئیے گئے  جنہیں متعلقہ کمیٹیوں کو بھجوادیا گیا۔سوموار کے روز سینیٹ اجلاس کے دوران سینیٹر جاوید عباسی نے اسلام آباد واٹر کینال و دیمز سیفٹی بل پیش کئے اوربتایابل کا مقصد پانی کے مقاما ت کنال اور ڈیمز کیلئے حفاظتی اقدامات کرنا، اتھارٹی بنانا ہے ایوان کی منظوری کے بعد بل متعلقہ کمیٹی کو بھجوا دیا گیا،سینیٹر جاوید عباسی نے مذہبی اقلیتوں کے حقوق کے حوالے سے بل پیش کیا اور کہاملک میں اقلیتوں کو مکمل آزادی پر زور دیا گیا ہے اور آئین کا آرٹیکل 20میں بھی یہی کہتا ہے، اس حوالے سے قانون بنانے کی ضرورت ہے ایوان کی منظوری کے بعد بل متعلقہ کمیٹی کو بھجوا دیا گیا۔بعدازاں سینیٹر جاوید عباسی نے اسلام آباد ہائی کورٹ ترمیمی بل 2020پر قائمہ کمیٹی کی رپورٹ پیش کی،چیئرمین سینیٹ نے اراکین سے بل کی شق وار منظوری لی،بعدمیں ایوان نے بل کو کثرت رائے سے منظور کرلیا۔سینیٹر مہر تاج روغانی نے یونانی ہومیو پیتھک کے حوالے سے قائمہ کمیٹی کی رپورٹ پیش کی تاہم اپوزیشن کی جانب سے ترامیم پر سینیٹر مہر تاج روغانی نے کہا یہ ترامیم آج ہی مجھے موصول ہوئی ہیں، 55سال کے بعد اس میں ترامیم لائی جارہی ہیں،ایوان سے درخواست ہے بل منظور کیا جائے اس موقع پر سینیٹر جاوید عباسی نے کہا ہم یہ ترامیم ایوان میں لائے ہیں چیئرپرسن کمیٹی نے کہا کمیٹی میں اس پر بہت زیادہ بحث ہوچکی ہے اگر منظور نہ کیا گیا تو یہ کمیٹی کیساتھ بھی زیادتی ہوگی اس موقع پر ایوان نے ترامیم کیساتھ اراکین سے بل کی شق منظوری لینے کے بعدبل کو کثرت رائے سے منظور کر لیا،سینیٹر فیصل جاوید نے صوبائی موٹروہیکل آرڈیننس 1965 میں ترمیم کے بل پر قائمہ کمیٹی کی رپورٹ پیش کی جسے اراکین سے شق وار رائے لینے کے بعد کثرت رائے کی بنیاد پر منظور کر لیاگیا۔بعدازاں سینیٹ اجلاس کے دوران سینیٹر ثمینہ سعید نے قرارداد پیش کی کہ حکومت وفاقی دارالحکومت میں بچوں کیلئے علیحدہ لاک آپ بنائے جس پر وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا بچوں کیلئے علیحدہ لاک آپ بن چکے ہیں اور علیحدہ کورٹس بنانے کی بھی منظوری ہوچکی ہے،ایوان نے قرارداد کی کثرت رائے سے منظوری دیدی،اس موقع پر چیئرمین سینیٹ نے قرا ر د اد چاروں صوبوں کے سپیکرز کو بھجوانے کی ہدایت کی، سینیٹر منظور کاکڑ نے قرارداد پیش کی کہ حکومت بلوچستان اور خیبر پختونخوا سے لارج ٹیکس پیئرکے دفاتر منتقل کرنا چاہتی ہے اگرایسا کی گیا تو دونوں صوبوں کے ٹیکس دہندگان کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ ایوان یہ قراردادبھی متفقہ طورپر منظورکر لی۔ سینیٹر خوش بخت شجاعت نے ملک اور معاشرے کا مثبت پہلو اجاگر کرنے کیلئے پرنٹ و الیکٹرانیک میڈیا کے ذریعے ثقافت اور سماجی اقدار کو فروغ دینے کیلئے حکومت کی جانب سے اقدامات کیلئے قرارداد پیش کی،وزیر مملکت علی محمد خان نے اس کی حمایت کی، ایوان نے قرارداد کثرت رائے سے منظور کر لی۔

سینیٹ اجلاس

مزید :

صفحہ آخر -