سندھ حکومت کاکوئی نمائندہ عوام کی مدد کو نہیں آیا،حلیم عادل 

  سندھ حکومت کاکوئی نمائندہ عوام کی مدد کو نہیں آیا،حلیم عادل 

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ بارش کی پیشگی اطلاعات کے باوجود سندھ حکومت کی جانب سے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے۔ہم اپنی مدد آپ کے تحت شہریوں کی مدد کرتے رہے لیکن سندھ حکومت کا کوئی نمائندہ عوام کی مدد کو نہیں آیا۔مرتضیٰ وہاب کو لاہور میں گدھے کے ڈوبنے کی تو فکر ہے لیکن کراچی میں شہریوں کے ڈوبنے پر وہ خاموش رہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو سندھ اسمبلی کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔حلیم عادل شیخ نے کہا کہ آج سے تین روز قبل ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وھاب ایک تصویر لے کر آئے تھے کہ ایک گدھا لاہور میں ڈوب گیا، مرتضیٰ وھاب اس غم میں نڈھال تھے لیکن ان کو کراچی کی عوام کی فکر نہیں تھی جہاں بارش کی وجہ سے شہری ڈوب روب رہے تھے مرتضیٰ وھاب نے ساری پریس کانفرنس ڈوبے ہوئے گدھے پر کی تھی۔ لاہور تو بارش کے پانچ گھنٹے بعد خشک ہوگیا لیکن کراچی میں کئی روزے علاقے پانی کی زد میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کی بہتری کے لئے ایک کوآرڈٰنینشن کمیٹی کام کی ہے اس پر ہم نے اتفاق کیا ہے جس پر ملکر اس ایشو پر چلنا ہے لیکن ہر جماعت کا اپنا موقف ہے۔ گدھا جہاں ڈوبا لاہور میں وہاں پانی پانچ گھنٹے میں پانی ختم ہوگیا۔ لیکن کراچی کا گدھا پانی کے ساتھ ساتھ کچرے میں بھی ڈوبا ہوا تھا۔ گزشتہ روز اخبارات نے بھی دکھایا کہ ناگن چورنگی میدان جنگ کا منظر پیش کر رہا ہے مرتضیٰ وھاب اس پر بھی پریس کانفرس کرلیتے۔ کاش مرتضیٰ وھاب کو جتنی فکر لاہور میں گدھے کے ڈوبنے کی تھی اس سے آدھی فکر کراچی کے شہریوں کی ہوتی۔ کاش سندھ کے حکمرانوں کو ناگن چورنگی، احسن آباد، سرجانی ٹاؤن، خدا کی بستی، نارتھ کراچی، نیو کراچی، گجر نالا، ایف سی ایریا کے کی فکر ہوتی۔ایک گھر کے تین لوگ ڈوب جاتے ہیں بچانے والا کوئی نہیں آتا۔ تین ہٹی پر بچہ فٹ بال لینے جاتا ہے ڈوب جاتا ہے کوئی نکالنے نہیں آتا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -