حکومت ناکام ہو چکی، غریب کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا: شہباز شریف، ذمہ دارن لیگ اور پی پی: شبلی فراز، فیاض چوہان 

حکومت ناکام ہو چکی، غریب کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا: شہباز شریف، ذمہ ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)  پاکستان مسلم لیگ (ن)نے حکومت کی دو سالہ کارکردگی پر وائٹ پیپر جاری کر دیا،صدر  مسلم لیگ (ن)میاں شہباز شریف نے حکومت کی دو سالہ کارکردگی کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے غریب کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے، حکومت کوعوام کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں ہے، دو سال میں مہنگائی اور بیروزگاری میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے۔انہوں  نے کہا کہ تبدیلی سرکار نے مشکلات کے علاوہ کچھ نہیں کیا، ن لیگ دورمیں تاریخ سازترقی ہوئی جس کی مثال نہیں ملتی ہے۔ سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، راجہ ظفرالحق خواجہ آصف، احسن اقبال،  مفتاح اسماعیل، خرم  دستگیر کے ہمراہ پریس کانفرنس میں  حکومت کی دو سالہ کارکردگی پر وائٹ پیپر جاری  کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت نے سی پیک کا مذاق اڑایا اورالزامات لگائے جب کہ ہم نے نوازشریف کی قیادت میں تاریخی اقدامات کیے۔ان کا کہنا تھا کہ ہم نے ملک سے لوڈشیڈنگ کے اندھیرے ختم کیے جبکہ آج بجلی کی لوڈشیڈنگ ہے اورلوگوں کو مہنگی بجلی بھی مل رہی ہے، آج تک ہم  پر ایک دھیلے کی کرپشن ثابت نہیں ہوسکی۔ انہوں نے کہا چینی کی قیمت 100روپے کلو ہو گئی ہے۔ روپے کی قدر40فیصد کم کی گئی لیکن اس کے باوجودایکسپورٹ میں اضافہ نہیں ہوا، دنیا میں تیل کی قیمت زمین پرآچکی ہے لیکن پی ٹی آئی حکومت نے قیمتیں بڑھا دی ہیں، حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں بھی اضافہ کیا۔ان کا کہنا تھا کہ ہم بلا تفریق احتساب کے خلاف نہیں ہیں لیکن کابینہ میں موجود لوگوں سے کچھ بھی نہیں پوچھا جاتا ہے،  کورونا آنے سے پہلے لاکھوں لوگ بے روزگار ہو چکے تھے  تبدیلی سرکار نے عوام کی زندگی تباہ کردی، لوگ پرانے پاکستان کو ترس رہے ہیں۔شہباز شریف نے دعوی کیا کہ سفارتی محاذ پر بھی حکومت ناکام ہو چکی ہے جب کہ قوم اپوزیشن کو دیوار سے لگانے کا تماشہ دیکھ رہی ہے۔ عمران خان کہتے تھے مر جائیں گے لیکن آئی ایم ایف کے پاس نہیں جائیں گے تو وہ باتیں کہاں گئیں؟شہباز شریف نے استفسار کیا کہ این آراو نہیں دوں گاکے نعرے سے کیا لوگوں کے پیٹ بھرجائیں گے؟ موجودہ حکومت کی دو سالہ کارکردگی کا موازنہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت سے کرتے ہیں تو نواز شریف کے دور حکومت میں عوام کی خوشحالی کے اقدامات اور منصوبے بڑی تیزی سے مکمل ہوئے، اس کی 72سالہ تاریخ میں مثال نہیں ملتی، آج بجلی کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں۔ خواجہ آصف نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں جو قتل عام ہو رہا ہے وہ خارجہ پالیسی کی سب سے بڑی ناکامی ہے، انہوں نے شہیدوں کے لہو سے غداری کی، کشمیر میں جن ممالک نے ہماری حمایت کی ان کا ساتھ بھی نہیں دیا، پاکستان دنیا میں آج تنہا کھڑا ہے، ایران، افغانستان کے ساتھ بھی تعلقات بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ معاشی اورخارجہ پالیسی کے حوالے سے  ناکامیوں کے انبارہیں، ملائیشیانے کشمیرپرساتھ دیالیکن وہاں کانفرنس میں نہیں گئے، حکومت کی کشمیرپالیسی مکمل  ناکام ہوچکی ہے،سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ انرجی کے شعبے میں حکومت کی نااہلی نے ہزاروں ارب روپے کا نقصان پہنچایا،وزراء کے پاور پلانٹس چل رہے ہیں، مہنگی بجلی دے رہے ہیں،گھریلو صارفین کے بجلی کے بلوں میں 30فیصد اضافہ کردیا گیا،وزراء نے گردشی قرضے کنٹرول کرنے کیلئے بجلی کی قیمت بڑھائی ، حکومت بے خبر اور جھوٹ بول رہی ہے۔شاہدخاقان عباسی نے کہا کہ  ٹرانسمیشن لاسز 19فیصدتک پہنچ چکے ہیں، 5ہزارمیگاواٹ کے ایل این جی پلانٹ لگائے گئے گردشی قرضوں میں یومیہ 120کروڑکااضافہ ہورہاہے،،  مفتاح اسماعیل نے پریس کانفرنس  سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے 5سال میں 10ہزارارب قرض لے کرموٹرویزبنائی، انہوں نے 2 سال میں کوئی ترقیاتی کام نہیں کیا،12 ہزارارب قرض بڑھانے کی ذمہ دارحکومت ہے،آٹا اورچینی میں کرپشن ہوئی سب جانتے ہیں،آٹا اورچینی سمیت ہرچیزمہنگی کردی گئی،700 ارب کے نئے ٹیکسز لگائے گئے،چاول،کپاس اورگنے کی پیداوارکم ہوئی۔ شہباز شریف نے کہا ہے کہ تبدیلی سرکار دو سال میں نوازشریف کے تین ادوار سے زیادہ قرض لے چکی پھر بھی لوگ ایک وقت کی روٹی اور پرانے پاکستان کو ترس رہے ہیں۔۔شہبازشریف کا کہنا تھا کہ تاریخ میں پہلی بارگندم کٹائی سیزن ختم ہونے سے پہلے ناپید ہوگئی،

شہباز شریف

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے  کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی پاکستان کی تباہی کی ذمہ دار ہیں اس لئے عوام نے انھیں رد کر دیا ہے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی باتوں سے لگتا ہے کہ وہ کسی اور ملک میں رہتے تھے۔ شہباز شریف نے جن مسائل کی بات کی، ان کے ذمہ دار وہ خود ہیں۔شبلی فراز نے کہا کہ اپوزیشن ایجنڈا مال بنانا تھا۔ انہوں نے مال بنانے کیلئے ہر ادارے کو کمزور کیا۔ شہباز شریف کے منہ سے اشرافیہ کا نام سنا تو ہنسی آگئی۔وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ آئی پی پیز سے مہنگی بجلی کے معاہدے انہوں نے ہی کیے تھے۔ مہنگے معاہدے کرکے کک بیکس لی گئیں۔ آئی پی پیز سے معاہدوں کا ازسرنو جائزہ لیا گیا۔ ہم نے سستی بجلی کی ابتدا کر دی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سابق دور میں ڈالر کی قدر مصنوعی طریقے سے برقرار رکھی گئی۔ انہوں نے ہر وہ کام کیا جس سے انہیں فائدہ ملے۔ سابق حکومت نے عوام کا خون چوسا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر حماد اظہر کا کہنا تھا کہ سابق حکومت نے حالات جان بوجھ کر خراب کیے، انہیں پتا تھا کہ ان کی حکومت نہیں آنی۔ آئی پی پیز، کارکے، ریکوڈک اور گرے لسٹ میں انہوں نے پاکستان کو ڈالا۔ معیشت اتنی بہتر تھی تو موڈیز نے ریٹنگ کو پانچ فیصد ڈاؤن گریڈ کیوں کیا تھا؟انہوں نے سوال اٹھایا کہ ماضی میں شوگر انڈسٹری کو دی گئی سبسڈی کا حساب کیوں نہیں لیا گیا؟ سخت فیصلوں کے بعد ہم نے معیشت کو سنبھالا دیا۔ ہمیں معلوم ہے جب کارٹل پر ہاتھ ڈالا جائے تو ری ایکشن بھی آتا ہے۔ کارٹل کے خلاف گھیرا تنگ کرتے ہوئے دونوں جماعتوں کے بگاڑ کو ہم ٹھیک کر رہے ہیں۔ وزیرِ اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا  کہ مسلم لیگ (ن) کی ساری قیادت الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے اور میں نہ مانوں کا راگ الاپ رہی ہے۔ آلِ شریف نے ایک دھیلے کی کرپشن نہیں کی بلکہ قوم کو اربوں ڈالرز کا ٹیکا لگایا۔مسلم لیگ (ن) کی پریس کانفرنس پر ردِعمل دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف صاحب کی شکایت کہ پی ٹی آئی سے دکھوں کے علاوہ کچھ نہیں ملا، جائز ہے۔ یہ سارے دکھ کرپشن، منی لانڈرنگ، جعلی اکاؤنٹس، بد دیانتی اور اقربا پروری کے پیدا کردہ ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف کی ایک دھیلے کی کرپشن نہ کرنے کی گردان بھی بالکل درست ہے کیونکہ انہوں نے دھیلے کی نہیں اربوں کی کرپشن کی۔ اس کرپشن کے ڈھیروں ثبوت جے آئی ٹی، نیب اور احتسابی اداروں کے پاس بدرجہ اتم موجود ہیں۔صوبائی وزیر اطلاعات نے کہا کہ شہباز شریف ڈرائنگ روم سیاست کی بجائے گزشتہ چھ ماہ میں ملک کے دورے کرتے تو زیادہ مناسب ہوتا۔ چالیس سال تک پنجاب پر حکمرانی کرنے والے کس منہ سے سہولیات کی فراہمی کا رونا رو رہے ہیں 

شبلی فراز

مزید :

صفحہ اول -