صوبہ بھر میں حساس ومرکزی جلوسوں، مجالس کو 4لئیر سیکیورٹی فراہم کی جائے: آئی جی 

صوبہ بھر میں حساس ومرکزی جلوسوں، مجالس کو 4لئیر سیکیورٹی فراہم کی جائے: آئی ...

  

لاہور(کرائم رپورٹر)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب شعیب دستگیر نے کہا ہے کہ عشرہ محرم الحرام کے دوران صوبے کے تمام اضلاع میں حساس و مرکزی جلوسوں اور مجالس کو 4لئیر سیکیورٹی فراہم کی جائے جبکہ عزاداروں کی سیکیورٹی کیلئے واک تھروگیٹس، میٹل ڈٹیکٹرزسے جامہ تلاشی اورسی سی ٹی وی مانیٹرنگ اور ویڈیو ریکارڈنگ کا انتظام بھی کیا جائے۔انہوں نے افسران کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ جلوسوں اور مجالس کے اوقات کار کی پابندی پر عملد رآمد ہر قیمت پر یقینی بنایا جائے اور تمام اضلاع میں حساس امام بارگاہوں، ماتمی جلوسوں اور مجالس کے مقامات کے گردو نواح میں سرچ، سویپ، کومبنگ اور انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز کا سلسلہ جاری رکھا جائے جبکہ حساس جلوسوں اور مجالس کے روٹ پر آنے والی عمارتوں کی چھتوں پر سنائیپرز اورعزاداروں کی سیکیورٹی کیلئے مجالس اور جلوسوں میں سادہ کپڑوں میں کمانڈوز کو بھی تعینات کیا جائے انہوں نے مزیدکہاکہ محرم کے دورا ن شہریوں میں احساس تحفظ کی فضا اجاگر کرنے کیلئے تمام اضلاع میں سینئر افسران کی زیر نگرانی پولیس، ڈولفن، ٹریفک اور دیگر فیلڈ فارمیشنز مل کر فلیگ مارچ کریں جبکہ محرم کے جلوسوں کے روٹس اور مجالس کے مقامات پر لائٹس اور صفائی کے انتظامات پر خاص توجہ دی جائے۔ان خیالات کا اظہار  سنٹرل پولیس آفس میں منعقدہ ویڈیو لنک کانفرنس میں صوبے کے تمام آر پی اوز، سی پی اوز اور ڈی پی اوز کو ہدایات دیتے ہوئے کیا۔اس موقع پر تمام آر پی اوز اور ڈی پی اوز نے ویڈیو لنک کے ذریعے اپنے اضلاع میں محرم سیکیورٹی انتظامات کے حوالے سے بریفنگ دی۔کانفرنس میں ایڈیشنل آئی جی آئی اے بی اظہر حمید کھوکھر، ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی محمد طاہر رائے، ایڈیشنل آئی جی سپیشل برانچ پنجاب، زعیم اقبال شیخ، ڈی آئی جی آپریشنز پنجاب، سہیل اختر سکھیرا، ڈی آئی جی ہیڈ کوارٹرز، سید خرم علی، ڈی آئی جی آئی ٹی، وقاص نذیر اور اے آئی جی آپریشنز، عمران کشور سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے۔

دوران اجلاس آئی جی پنجاب کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ محرم الحرام میں پنجاب کے تمام اضلاع میں امام بارگاہوں اور مجالس کے علاوہ دیگر مکتبہ فکر کی حساس مساجد اور دینی عبادت گاہوں کی سیکیورٹی مزید بڑھا دی گئی ہے اور عشرہ محرم کے دوران صوبے کے تمام اضلاع میں 9127جلوس اور36464مجالس منعقد ہورہی ہیں چنانچہ جلوسوں کی سیکیورٹی ڈیوٹی پر 202768 افسران واہلکارجبکہ مجالس کی سیکیورٹی ڈیوٹی پر 235185افسران واہلکارتعینات ہونگے۔اسی طرح جلوس اور مجالس کی سیکیورٹی پر88129پولیس قومی رضاکار،17312سپیشل پولیس اہلکار اور 225186والنٹئیرز بھی فرائض سر انجام دیں گے۔ آئی جی پنجاب نے سی سی پی او لاہور، تمام آرپی اوز اور ڈی پی اوز کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کا بطور خاص خیال رکھا جائے کہ مجالس اور جلوسوں کی سیکیورٹی پر مامور اہلکار اس وقت تک ڈیوٹی پوائنٹ نہ چھوڑیں جب تک آخری عزادار مجلس اور جلوس کے مقام سے چلا نہ جائے۔آئی جی پنجاب نے آر پی اوز اور ڈی پی اوز کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کہ محرم الحرام کے دوران وال چاکنگ اورلاو ¿ڈ سپیکر ایکٹ پر عملدر آمدکو سختی سے یقینی بنایا جائے جبکہ کالعدم تنظیموں اور فورتھ شیڈول میں شامل افراد کی سرگرمیوں کی کڑی نگرانی کی جائے۔ ا نہوں نے مزید کہا کہ پولیس افسران امام بارگاہوں کی انتظامیہ اور علاقائی امن کمیٹیوں کے ساتھ قریبی رابطہ رکھیں اور حساس جلوسوں اور مجالس میں پولیس افسران خود ڈیوٹی دینے کے علاوہ امن کمیٹی کے ممبران کی خدمات سے بھی بھرپور استفادہ کریں تاکہ سیکیورٹی انتظامات میں کوئی کمی باقی نہ رہے۔انہوں نے تاکید کی کہ مجالس اور جلوسوں کے اوقات کا رکو مد نظر رکھ کر ٹریفک مینجمنٹ کے موثر پلان پر عمل درآمد کیا جائے تاکہ یوم عاشور اور دیگرمرکزی جلوسوں کے موقعوں پر بالخصوص اہم شاہراو ¿ں پر ٹریفک کا بہاو ¿تعطل کا شکار نہ ہوسکے۔

مزید :

علاقائی -