طالبان سے ملاقات کے بعد شاہ محمود قریشی نے افغان مسئلے کا حل بتا دیا

طالبان سے ملاقات کے بعد شاہ محمود قریشی نے افغان مسئلے کا حل بتا دیا
طالبان سے ملاقات کے بعد شاہ محمود قریشی نے افغان مسئلے کا حل بتا دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)افغان طالبان کے وفد نے ملا برادر کی سربراہی میں اسلام آباد میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی اور امن معاہدے سے متعلق پیشرفت پرتبادلہ خیال کیا گیا،طالبان نے افغانستان میں امن کے لئے پاکستان کے کردار کو سراہا۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغان طالبان کے وفد کو امن عمل کو سبوتاژ کرنے سے متعلق ممکنہ خطرات سے آگاہ کیا جبکہ افغان طالبان کے وفد نے امن عمل میں پاکستان کی مسلسل کاوشوں اور معاونت پر وزیر خارجہ شاہ محمود کا شکریہ ادا کیا۔افغان طالبان کے وفد نے وزیر خارجہ کو طالبان امریکہ معاہدے پر عملدرآمد سے متعلق بھی آگاہ کیا۔

ملاقات کےبعدمیڈیاسےگفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ توقع ہے افغان قیادت قیام امن کیلئے امن معاہدے سے بھرپور فائدہ اٹھائے گی، پاکستان خطے میں امن و استحکام کیلئے بین الافغان مذاکرات کے جلد انعقاد کا متمنی ہے۔شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان دیرینہ مذہبی، تاریخی اور جغرافیائی اعتبار سے برادرانہ تعلقات ہیں، افغانستان کے معاشی استحکام کیلئے عالمی برادری کو کاوشیں کرنےکی ضرورت ہے۔انہوں نےکہاکہ پاکستان،افغان امن عمل سمیت خطےمیں دیرپاامن و استحکام کیلئےمصالحانہ کوششیں جاری رکھے گا، پاکستان کا شروع دن سے موقف ہے کہ افغان مسئلے کا مستقل حل افغانوں کی سربراہی میں مذاکرات کے ذریعے ہی ممکن ہے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان، افغان امن عمل میں، اپنا مصالحانہ کردار، مشترکہ ذمہ داری کے تحت ادا کرتا آ رہا ہے، افغانستان میں امن پاکستان کی دیرینہ خواہش ہے،افغانستان کے مسئلے کاحل عسکری نہیں سیاسی ہے۔

مزید :

قومی -