ایشیائی باشندے کی برطانوی لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی

ایشیائی باشندے کی برطانوی لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی
ایشیائی باشندے کی برطانوی لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی

  

لندن (نیوز ڈیسک) بیرون ملک جاکر جہاں اکثر لوگ محنت اور دیانت سے نام بناتے ہیں وہیں ایسے شیطان صفت بھی ہوتے ہیں جو اپنی عزت برباد کرنے کے علاوہ اپنے وطن کیلئے بھی شرمندگی کا باعث بنتے ہیں۔برطانیہ میں رہائش پذیر 33 سالہ عبدالغفور بھی انہیں سیاہ کرداروں میں سے ایک ہے جس نے 4 بچوں کا باپ ہونے کے باوجود ایک نوجوان لڑکی کو وحشیانہ پن کی انتہا کرتے ہوئے سڑک سے اٹھا لیا اور بدترین درندگی کا نشانہ بناتا رہا۔

خاندان اور کم سن بچوں کے سامنے لڑکی سے جنسی درندگی

لوٹن کراﺅن کورٹ کو بتایا گیا ہے کہ لڑکی جس کی عمر تقریباً 20 سال ہے اپنے کام سے فارغ ہونے کے بعد پیدل گھر واپس جارہی تھی۔ رات تقریباً ساڑھے گیارہ بجے عبدالغفور نے اسے تنہا پاکر شیطانی منصوبہ بنایا اور اسے زبردستی اٹھا کر قریبی جھاڑیوں میں لے گیا۔درندہ صفت شخص نے بے بس لڑکی کو تین گھنٹے تک وحشیانہ جنسی ظلم کا نشانہ بنایا۔ لڑکی نے مجرم کے حملے سے پہلے خطرہ بھانپ کر اپنی بہن کو مدد کیلئے ٹیکسٹ میسج بھیج دیا تھا جس کے بعد پولیس نے علاقے میں اس کی تلاش شروع کردی تھی۔ بالآخر تین گھنٹے کی تلاش کے بعد انسپکٹر جیمی لونگ ود نے انہیں دیکھ لیا اور مجرم کو فرار ہونے کی کوشش کے دوران گرفتار کرلیا۔عدالت کی طرف سے شیطان صفت مجرم کو عمر قید کی سزا سنائی جاچکی ہے۔

مزید :

جرم و انصاف -