ایف بی آر یونین کی ہڑتال،پولیس سے ہاتھا پائی ،17گرفتار

ایف بی آر یونین کی ہڑتال،پولیس سے ہاتھا پائی ،17گرفتار

  

لاہور (کامرس رپورٹر) ایف بی آر یونین کے رہنماﺅں سمیت 17 ممبران کو پولیس سے ہاتھا پائی کرنے اور ٹیکس ہاﺅس میں گھس کر زبردستی ہڑتال کروانے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق ایف بی آر یونین کے رہنما عبدالقیوم نے اپنے مطالبات کے لئے گزشتہ روز کال کی ہڑتال دے رکھی تھی ۔ ٹیکس ہاﺅس نابھہ روڈ کی انتظامیہ نے یونین کو غیر قانونی ہڑتال نہ کرنے کے حوالے سے نوٹسز جاری کر رکھے تھے اور حفاظتی انتظامات کے تحت پولیس کو بھی طلب کر رکھا تھا ۔ گزشتہ روز یونین کے رہنما عبدالقیوم نے اپنے ساتھیوں سمیت ٹیکس ہاﺅس میں جانا چاہا تو پولیس نے ان کو جانے سے روک دیا جس پر یونین کے ممبران کی پولیس سے ہاتھا پائی ہو گئی ۔ پولیس نے موقع پر ہی عبدالقیوم سمیت 17 ممبران کو گرفتار کر لیا ۔ ملزمان کے خلاف تھانہ انار کلی میں 16 ایم پی او کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ۔ ٹیکس ہاﺅس کے کمشنر ٹیکس وقار احمد نے خصوصی گفتگو میں بتایا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے رٹ نمبر 4004/2010 کے تحت دو ستمبر 2010 کو ایف بی آر یونین کو معطل کرتے ہوئے ان کی ہر طرح کی سرگرمیوں پر پابندی عائد کر دی تھی ۔ یونین کی جانب سے پابندی کے باوجود سرگرمیاں جاری رکھنے پر ان کے خلاف توہین عدالت کے تین کیسز 153/2011 ، 68/2011 ،418/2013 زیر سماعت ہیں عدالت کی جانب سے یونین کے رہنماﺅں کو نوٹسز بھی جاری کر رکھے ہیں اس کے باوجود بھی یونین نے رواں ہفتے کے آغاز پر بدھ کے لئے ہڑتال کی کال دی تھی جس پر انتظامیہ نے ان کو نوٹسز بھی جاری کئے تھے کہ یونین کی سرگرمیوں پر پابندی ہے اس لئے وہ ہڑتال کی کال نہ دیں اس کے باوجود گزشتہ روز یونین کے ممبران نے ہڑتال کروانے کے لئے ٹیکس ہاﺅس میں زبردستی گھسنے کی کوشش کی تو موقع پر موجود پولیس نے ان کو روکنا چاہا تو ان کی جانب سے شدید مزاحمت کی گئی اور پولیس سے ہاتھا پائی کی گئی جس پر پولیس نے ان کو موقع پر ہی گرفتار کر لیا ۔

ایف بی آر یونین

مزید :

صفحہ آخر -