دکھی ماں نے داعش سے درد بھر ی اپیل کر دی

دکھی ماں نے داعش سے درد بھر ی اپیل کر دی
دکھی ماں نے داعش سے درد بھر ی اپیل کر دی

  

روم (مانیٹرنگ ڈیسک) اٹلی میں مقیم ایک مسلمان خاتون کا تین سالہ بیٹا گزشتہ ایک سال سے شدت پسند تنظیم داعش کے پاس ہے اور حال ہی میں انٹرنیٹ پر بھیجی گئی اس کی تصاویر نے دکھی ماں کو غم سے بے حال کر دیا ہے اور اس نے اپیل کی ہے کہ اس کے بیٹے کو اس کے پاس بھیج دیا جائے۔

حکومت نے لاکھوں غیر مصدقہ سمیں مستقل بند کرنے کیلئے گرین سگنل دیدیا

لیڈیا ہریرا کا تعلق ابتدائی طور پر کیوبا سے تھا اور وہ عیسائی تھیں لیکن بوسنیا سے تعلق رکھنے والے اسمار میسیونووک سے شادی کے بعد وہ مسلمان ہو گئیں اور ان کے ہاں بیٹا پیدا ہوا جس کا نام اسماعیل رکھا گیا۔ ننھے اسماعیل کو اس کا والد اپنے ساتھ شام لے گیا اور اطلاعات کے مطابق ستمبر میں وہ ایک لڑائی کے دوران ہلاک ہو گیا۔

 اسماعیل کی تصاویر داعش سے متعلقہ انٹرنیٹ ویب سائٹوں پر بھیجی گئی ہیں جنہیں دیکھنے کے بعد اس کی ماں تڑپ اٹھی ہے۔ انہوں نے ایک ٹی وی پروگرام میں دردمندانہ اپیل کی ہے کہ وہ ہر لمحہ اپنے ننھے بیٹے کے بارے میں سوچتی رہتی ہیں اور درخواست کرتی ہیں کہ اسے واپس بھیج دیا جائے۔

مزید :

انسانی حقوق -