6سال سے سعودی عرب میں بغیر تنخواہ کے پھنسی غیر ملکی ملازمہ کی داستان

6سال سے سعودی عرب میں بغیر تنخواہ کے پھنسی غیر ملکی ملازمہ کی داستان

  

ریاض(نیوزڈیسک)ایک بھارتی خاتون جو پچھلے چھ سال سے سعودی عرب میں مقیم ہے اور کام کرنے کے باوجود اپنی تنخواہ کی منتظر ہے کو خروج بھی نہیں دیا جارہا۔اس خاتون کی دردناک کہانی حال ہی میں سعودی عرب کے اخبار عرب نیوز نے شائع کی ہے جس میں یہ بتایا گیا ہے کہ بھارتی ریاست کیرالہ سے تعلق رکھنے والی شمسوماچھ سال قبل کام کی غرض سے ایک ریکروٹنگ ایجنسی کے ذریعے سعودی عرب آئی جہاں اسے 900سعودی ریال (تقریباً24ہزار روپے)پر ایک گھر میں کام دیا گیالیکن گھر والوں نے اتنے پیسے دینے سے انکار کرتے ہوئے یہ تنخواہ 700ریال (تقریباً18ہزار روپے) کردی ۔لیکن یہ تنخواہ بھی صرف چار ماہ تک دی گئی جس کے بعد مالک نے اسے مزید رقم دینے سے انکار کردیا اور اس پر کسی سے بھی بات کرنے یا ملنے پر پابندی بھی لگا دی۔

وزن کم کرنے کےلئے سرجری کے خطرناک اثرات ،جدید تحقیق میں ہوش اُڑانے والے انکشاف

خوش قسمتی سے لاچار خاتون کا رابطہ اپنی ہم وطن سے ہو گیا جس نے اسے کہا کہ وہ کسی بھی طرح سے اپنے گھر والوں کے ذریعے بھارتی ایمبیسی سے رابطہ کرکے اپنی شکایت درج کروائے۔جس کے بعد بھارتی ایمبیسی مقامی پولیس کے ذریعے شمسوما کو تلاش کرنے میں کامیاب ہو گئی اور اسے ظالم مالک کے گھر سے برآمد کرلیا گیا۔بھارتی ایمبیسی مالک کو اس بات پر راضی کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے کہ وہ خاتون کو 33ہزار سعودی ریال(تقریباًساڑھے آٹھ لاکھ روپے)ادا کرے اور ساتھ اس کا خروج بھی لگوا کر دے جبکہ خاتون کو حکومت کے ویلفئیر سینٹر میں رکھا گیا ہے۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ مالک نے تین ہفتے کا وقت مانگا تھا جو کہ گزر چکا ہے لیکن ابھی تک اس کی جانب سے کوئی رقم نہیں ادا کی گئی تاہم بھارتی ایمبیسی کا کہنا ہے کہ وہ جلد یہ معاملہ حل کر کے خاتون کو واپس بھارت بھجوادیں گے۔

مزید :

انسانی حقوق -