سپیکر کانفرنس کے انعقاد سے پاکستان کی خود مختاری واضح ہو گئی، حافظ حمد اللہ

سپیکر کانفرنس کے انعقاد سے پاکستان کی خود مختاری واضح ہو گئی، حافظ حمد اللہ

  



کوئٹہ( این این آئی) جمعیت علماء اسلام کے رہنما و سینیٹر حافظ حمد اللہ نے کہا ہے کہ چھ ملکی سپیکر کانفرنس کے انعقاد اور امریکہ سے متعلق تحفظات کا اظہار خود مختار ممالک کا شیوہ ہے سینیٹ چےئرمین نے جس انداز میں ملک سے متعلق پالیسی بیان کی وہ خوش آئند ہے اور اس سے پاکستان کی خود مختاری اور امریکہ سے متعلق واضح پالیسی سامنے آگئی ہے ‘یہ بات انہوں نے قبائلی رہنماء سعید آغا کی قیادت میں ملنے والے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہی‘ انہوں نے کہاکہ افغانستان اور فلسطین سے متعلق امریکہ نے جو پالیسی اختیار کی اس سے یہ معلوم ہوا کہ امریکہ شروع سے لیکر آج تک اپنی پالیسی دوسرے ممالک میں زبردستی مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے اور وہ کسی بھی ملک کی خود مختاری تسلیم نہیں کرتا انہوں نے کہ ہم نے پہلے واضح کیا تھا کہ امریکہ مسلمانوں اور خاص کر پاکستان کا دوست نہیں بن سکتا لیکن ہمارے حکمرانوں نے چند ڈالروں کی خاطر ان کی بات نہیں مانی او ر امریکہ کے ساتھ تعلقات ختم نہیں کئے اور آخر کار نائن الیون کے بعد پاکستان کو دہشتگردی کی طرف دھکیل دیا انہوں نے کہاکہ پاکستانی قوم اور فورسز نے امریکہ کی خاطر جو قربانی دی آج امریکہ ان قربانیوں کا اعتراف کرنے کی بجائے افغانستان میں ہاری ہوئی جنگ کا ملبہ پاکستان پر گرارہا ہے لیکن پاکستان کے عوام اور سیکورٹی ادارے امریکہ کی دوغلی پالیسی سے بخوبی آگاہ ہیں جن کی نمائندگی سینیٹ چےئرمین رضا ربانی نے چھ ملکی سپیکر کانفرنس کے دوران کی انہوں نے کہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ پاکستان کے تمام عوام حکمران اور سیکورٹی ادارے ملکر امریکہ کو ایسا جواب دیں کہ وہ آئندہ پاکستان سے متعلق سوچ تک نہ سکیں انہوں نے کہاکہ پاکستان ایک خود مختار اور آزاد ریاست ہے جس نے ہر دور میں دوسرے ممالک کی خود مختاری کا خیال رکھا اور ان ممالک سے مطالبہ کیا کہ وہ پاکستان کی خود مختاری کا بھی خیال کریں۔

مزید : علاقائی


loading...