اے پی ایس اور دیگر شہدا ء کی یاد میں تقریب ، زبر دست خراج عقیدت پیش کیا گیا

اے پی ایس اور دیگر شہدا ء کی یاد میں تقریب ، زبر دست خراج عقیدت پیش کیا گیا

  



لاہور (لیڈی رپورٹر) سابق وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ملٹری ڈاکٹرائن تبدیل ہونے کے بعد سیاسی ڈاکٹرائن بھی تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ سیاست سے بدعنوان اور غاصبوں کو باہر کرنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیشنل پریس کلب اسلام آباد اور آر آئی یو جے کے زیر اہتمام اے پی ایس اور ملک کے دیگر شہیدوں کی یاد میں منعقدہ تقریب اور متاع وطن کی مصنفہ ’’رابعہ رحمن روہی کے ساتھ ایک شام‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تقریب کی صدارت نامور دانشور اور نقاد پروفیسر فتح محمد ملک نے کی جبکہ تقریب سے پی ایف جے یو کے صدر افضل بٹ، نیشنل پریس کلب کے صدر شکیل انجم، آر آئی یو جے کے سابق صدر و موجودہ جنرل سیکرٹری علی رضا علوی اور موجودہ صدر مبارک زیب خان، جی پی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر جعفر اللہ خان، سینئر صحافی اور دانشور مظہر برلاس اور شہیدوں کے ورثاء نے خطاب کیا۔ اس موقع پر شہداء کے خانوادوں میں یادگاری شیلڈز بھی تقسیم کی گئیں۔ تقریب میں بڑی تعداد میں پشاور سے اے پی ایس کے شہیدوں کے ورثاء نے شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ اچھے اور برے طالبان کا فرق ختم ہوچکا ہے اور تمام طالبان کو قاتل اور دہشت گرد قرار دیا جاچکا ہے۔ اسی طرح سیاسی ڈاکٹرائن بھی تبدیل کرنے کی ضرورت ہے تاکہ لٹیروں اور خدمت گاروں کا فرق واضح ہوسکے۔ نامور دانشور اور نقاد پروفیسر فتح محمد ملک نے کہا کہ علامہ اقبال نے کہا تھا ’’دین ملا فی سبیل اللہ فساد‘‘ بدقسمتی سے بعض ملاؤں نے اسلام کی غلط تشریح کرکے معاشرے میں نفرتوں کو پروان چڑھایا۔ متاع وطن کی مصنفہ رابعہ رحمن نے کہا کہ کتاب کی تدوین میں شوہر اور مختلف دوستوں نے بے حد مدد کی ہے۔ میں ان کی شکر گزار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ شہیدوں کا خون ہمارے اوپر قرض ہے۔ پی ایف یو جے کے صدر افضل بٹ نے کہا کہ آر آئی یو جے اور نیشنل پریس کلب نے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے اچھی تقریب کا اہتمام کیا ہے۔ ہمیں اپنے شہیدوں کی قربانیاں کبھی فراموش نہیں کرنی چاہئیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...