پاک بحریہ گوادر ، سی پیک سمندری سرحدوں کے تحفظ کیلئے پرعزم : شاہد خاقان عباسی

پاک بحریہ گوادر ، سی پیک سمندری سرحدوں کے تحفظ کیلئے پرعزم : شاہد خاقان ...

  



کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ پاک بحریہ گوادر پورٹ اور پاک چین اقتصادی راہداری سمیت ملک کی بحری سرحدوں کے تحفظ کے لیے پر عزم ہے۔ترجمان پاک بحریہ کے مطابق بحریہ کے جنگی یونٹس نے شمالی بحیرہ عرب میں آپریشنل صلاحیتوں کا شاندار مظاہرہ کیا جس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے شرکت کی اور بحری جہاز نصر سے آپریشنل مشقوں کا معائنہ کیا، اس موقع پر ہوائی جہازوں اور ہیلی کاپٹروں نے فلائی پاسٹ کا مظاہرہ بھی کیا۔ترجمان پاک بحریہ کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان نے پاک بحریہ کی آپریشنل صلاحیتوں پر بھر پور اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاک بحریہ گوادر پورٹ اور پاک چین اقتصادی راہداری سمیت ملک کی بحری سرحدوں کے تحفظ کیلئے پر عزم ہے، ملک کی بحری سرحدوں کے دفاع کیلئے پاک بحریہ کے افسروں اور جوانوں کی پیشہ ورانہ مہارتیں قابل تعریف ہیں۔ترجمان پاک بحریہ کے مطابق ان مشقوں میں افرادی قوت اور سازو سامان کی ایک سے دوسرے جہاز پر منتقلی، راکٹ ڈیپتھ چارج فائرنگ اور سرچ اینڈ سیزر شامل ہیں۔پاک بحریہ کے جنگی یونٹس کا شمالی بحیرہ عرب میں آپریشنل صلاحیتوں اور فلیٹ ریویو کا شاندار مظاہرہ کیا جب کہ وزیراوعظم شاہد خاقان عباسی نے بحری جہاز نصر سے آپریشنل مشقوں کا معائنہ کیا۔

وزیر اعظم

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ روس سے تعلقات پاکستان کی ترجیحات میں شامل ہے، تجارت اور توانائی کے شعبے میں روس سے طویل المیعاد شراکت داری چاہتے ہیں۔یہ بیان انہوں نے روسی پارلیمنٹ کے چیئرمین کے وفد سے ملاقات کے دوران دیا جس میں سپیکر ایازصادق، ماروی میمن، مخدوم خسرو بختیار نے بھی شرکت کی۔ روسی پارلیمنٹ ڈیوما کے چیئرمین نے پرجوش استقبال پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں سب سے بڑی قیمت ادا کی، ہماری جدوجہد صرف علاقہ نہیں عالمی امن کیلئے ہے۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں تنازعات کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، پاکستان وہاں امن اور استحکام کاخواہاں ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ افغان تنازعات پر افغان قیادت کی مرضی کے حل کی حمایت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ روس پاکستان اقتصادی تعلقات، تجارتی حجم بڑھانے کے وسیع مواقع موجود ہیں، دونوں ممالک میں شراکت داری امن واستحکام اور علاقائی تعاون بڑھائیگی۔شاہد خاقان کا مزید کہنا تھا کہ تجارت اور توانائی کے شعبے میں روس سے طویل المیعاد شراکت داری چاہتے ہیں۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان اور روس کے درمیان ایک مضبوط شراکت داری خطے میں امن، استحکام اور علاقائی تعاون کے فروع میں اہم ثابت ہوگی۔اسلام آباد میں منعقدہ پہلی سپیکرز کانفرنس میں شرکت کیلئے آئے ہوئے روسی فیڈریشن ڈوما کے چیئرمین وچے سلیف ولودین نے اپنے وفد کے ہمراہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کی۔

روسی وفد

مزید : علاقائی


loading...