مظفرآباد،تھانہ سول سیکرٹریٹ پولیس کی غریب محنت کش پر بدترین تشدد

مظفرآباد،تھانہ سول سیکرٹریٹ پولیس کی غریب محنت کش پر بدترین تشدد

  



مظفرآباد(بیورورپورٹ)تھانہ پولیس سول سیکرٹریٹ اور چوکی پولیس راڑہ کے اہلکاران کی طرف سے رات کی تاریکی میں غریب محنت کش ابہیال کے رہائشی سید خاقان شاہ کاظمی پر بدترین تشد ور جان سے مارنے کے بعد مذکورہ شخص زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا ہو گیا،ایمز ہسپتال سے مذکورہ شخص کو پمز ہسپتال اسلام آباد ریفر کر دیا گیا،سید خاقان شاہ کی ذہنی وجسمانی حالت اتنی خراب ہو چکی ہے کہ وہ کسی وقت بھی جان سے ہاتھ دھو سکتا ہے،سید خاقان شاہ کے بازو میں چوکی آفیسر راڑہ واجد علوی،ملک قلندر اور دیگر نے گولی ماری،اور بدترین تشدد کے بعد دفع کی ہڈیاں کریک ہو گئیں،گوڈے اور پسلیاں،ہاتھ کی انگلیاں فیکچر ہو گئیں ہیں پمز ہسپتال ہسپتال میں سٹی سکین کے بعد خاقان شاہ کا آپریشن کیا جائے گا خاقان شاہ کی جسمانی حالت نازک ہو چکی ہے ادھر ورثا کی طرف سے ایس ایس پی مظفرآباد کو ایس ایچ او زاہد عمر چوکی آفیسر راڑہ کے خلف تحریری درخواست دی ایس ایس پی نے تشدد کرے والے پولیس اہلکاران کو ہی تحقیقات کے احکامات جاری کئے،خاقان شاہ کا بیٹا جب والد پر تشدد کی درخواست لے کر تھانے پہنچا تو طاہر نامی پولیس اہلکار نے گالم گلوچ شروع کر دی اور دھمکی دی کہ پولیس نے گولی ماری تو کون سی قیامت آجائے گی تمہارے والد کو مار دیں گے ہمارا کوئی کیا بگاڑ لے گا،سید خاقان شاہ نے صحافیوں کو بتایا کہ میری درخواست پر غیر جانبدرانہ تحقیقات کی جائے اور تشدد کرنے والے پولیس اہلکاران کے خلاف کارروائی کی جائے،انہوں نے کہا کہ زاہد عمر پہلے تو پولیس تشدد سے انکاری ہو گیا اب اپنے پولیس اہلکاران کو بچانے میں مگن ہے،انہوں نے انسپکٹر جنرل پولیس ڈپٹی کمشنر،ایس ایس پی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ زاہد عمر واجد علوی سمیت مجھ پر تشدد کرنے والے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کریں اور کیس کسی دوسرے پولیس آفیسر کو سونپا جائے تشدد کرنے والوں سے انصاف ملنے کی کوئی توقع نہیں ہے اگر مجھے کچھ ہوا تو یہی پولیس اہلکاران ذمہ دار ہوں گے۔

Back

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...