’اب بھارت پاکستان سے یہ مطالبہ نہیں کرسکتا‘ کلبھوشن کی اہل خانہ سے ملاقات کے معاملے پر حامد میر پاکستان کی سفارتکاری کا ایسا مثبت نکتہ سامنے لے آئے کہ جان کر آپ کو بھی فخر ہوگا

’اب بھارت پاکستان سے یہ مطالبہ نہیں کرسکتا‘ کلبھوشن کی اہل خانہ سے ملاقات ...
’اب بھارت پاکستان سے یہ مطالبہ نہیں کرسکتا‘ کلبھوشن کی اہل خانہ سے ملاقات کے معاملے پر حامد میر پاکستان کی سفارتکاری کا ایسا مثبت نکتہ سامنے لے آئے کہ جان کر آپ کو بھی فخر ہوگا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے کہا ہے کہ کلبھوشن جادھو کی اہل خانہ اور بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر سے ملاقات سے عالمی عدالت انصاف میں پاکستان کا مقدمہ مضبوط ہوگا، اس ملاقات کے ذریعے پاکستان نے بھارت کا قونصلر رسائی کا مطالبہ تسلیم کیے بغیر ہی اسے بے معنی کردیا ہے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہا کہ کسی بھی قیدی تک قونصلر رسائی دینے کا مطلب ہوتا ہے کہ قیدی کی صحت دیکھی جائے یا اس کے زندہ یا مردہ ہونے کی تصدیق ہوسکے۔ کلبھوشن جادھو کے اہل خانہ کے ساتھ بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر بھی ملاقات میں موجود ہوں گے، اس طرح تکنیکی طور پر بھارت کو قونصلر رسائی نہیں ملی لیکن اگر ڈپٹی ہائی کمشنر موجود ہوں گے تو وہ اپنی آنکھوں سے کلبھوشن کی حالت دیکھ لیں گے جس سے قونصلر رسائی دیے بغیر ہی بھارت کا مطالبہ ختم ہوجائے گا۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

انہوں نے کہا کہ کلبھوشن جادھو کی اپنے اہل خانہ سے ملاقات کے بعد بھارت کا کلبھوشن سے زبردستی ویڈیو پیغام ریکارڈ کرانے کا پراپیگنڈا بھی غلط ثابت ہوجائے گاجبکہ اس کے ذریعے عالمی عدالت انصاف میں پاکستان کے مقدمے میں مضبوطی آئے گی۔

مزید : قومی /بین الاقوامی /سیاست /علاقائی /اسلام آباد