حکم نہ ماننے پر چیف سیکرٹری پنجاب کے وارنٹ جاری

حکم نہ ماننے پر چیف سیکرٹری پنجاب کے وارنٹ جاری
حکم نہ ماننے پر چیف سیکرٹری پنجاب کے وارنٹ جاری

  



اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت نے احکامات کی پیروی نہ کرنے کی وجہ سے چیف سیکرٹری پنجاب کیپٹن(ر) زاہد سعید کے قابل ضمانت وارنگ گرفتاری جاری کردئیے۔ انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کو ارسال کئے گئے عدالتی حکم نامے میں ہدایت کی گئی ہے کہ 27دسمبر کو چیف سیکرٹری پنجاب کو وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت (اسلام آباد) میں دن ایک بجے تک پیش کیا جائے۔ رواں برس 23 اگست کو انسداد ہراسیت محتسب نے خانیوال کے پاپولیشن ڈیپارٹمنٹ کی خاتون افسر کو ہراساں کرنے پر ضلعی پاپولیشن ویلفیئر آفیسر کو نوکری سے برطرف کرکے دو ملازمین کی ترقیاں ایک سال کیلئے روکنے کا حکم دیا تھا لیکن اس فیصلے پر ابھی تک عملدرآمد نہیں کرایا جاسکا۔ عدالتی حکم پر عملدرآمد کیلئے چیف سیکرٹری پنجاب کو ہدایت کی گئی تھی لیکن عدالت کی جانب سے بار بار طلبی کے باوجود چیف سیکرٹری پنجاب کی جانب سے پیش ہونے والے نمائندگان عدالت کو مطمئن نہیں کرسکے۔

لائیو ٹی وی پروگرامز، اپنی پسند کے ٹی وی چینل کی نشریات ابھی لائیو دیکھنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق رواں برس 25مئی کو خاتون افسر سمیرابتول نقوی کی جانب سے ضلعی پاپولیشن ویلفیئر آفیسر مجیب ربانی اور دو ملازمین مدثرہ سرفراز اور مدثر کے خلاف انسداد ہراسیت میں کیس رجسٹرڈ کرایا گیا۔ مقدمے کا فیصلہ تین ماہ کے مختصر عرصے میں انسداد ہراسیت کی جج یاسمین عباسی نے سنایا تھا۔ یاد رہے سمیرا بتول نے 22 مارچ 2016ءکو مدثرہ سرفراز اور مدثر کے خلاف محکمانہ انکوائری کیلئے درخواست دی تھی، جس میں محکمانہ طور پر خلاف ضابطہ کچھ اقدامات اٹھانے کے الزامات لگائے گئے تھے۔ عدالتی حکم نامے کے مابق مجیب ربانی کے نامناسب رویے سے درخواست گزار اور اس کے خاوند کا ناصرف مالی نقصان ہوا بلکہ ان کو ذہنی اذیت بھی پہنچی تھی۔

ملزمان کی جانب سے دس جون کو عدالت میں جو جواب جمع کرایا گیا وہ جواب سے زیادہ عدالت کیلئے ہدایت نامہ لگتا تھا۔ عدالتی حکم نامے کے عملدرآمد کیلئے مقدمہ کی مزید سماعت 27دسمبر کو وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت میں ہوگی۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد /پنجاب /لاہور


loading...