اہلخانہ سے ملاقات، کلبھوشن یادیو کو کوٹ کیوں پہنایا گیا تھا اور اس کی کیاحالت تھی؟ بھارتی میڈیا کا ایسا دعویٰ کہ پاکستانی بھی حیران پریشان رہ گئے

اہلخانہ سے ملاقات، کلبھوشن یادیو کو کوٹ کیوں پہنایا گیا تھا اور اس کی ...
اہلخانہ سے ملاقات، کلبھوشن یادیو کو کوٹ کیوں پہنایا گیا تھا اور اس کی کیاحالت تھی؟ بھارتی میڈیا کا ایسا دعویٰ کہ پاکستانی بھی حیران پریشان رہ گئے

  



نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان نے انسانی ہمدردی کی بنیادی پر بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی اس کے اہل خانہ سے ملاقات کرادی ہے، لیکن پاکستان کا یہ جذبہ بھارتی سرکار اور انڈین میڈیا کو کچھ ہضم نہیں ہوا ،پاکستان کے اس جذبے اور اقدام کو خراج تحسین پیش کرنے کی بجائے بھارتی میڈیانے زہر اگلنا شروع کردیا ہے۔

”کلبھوشن یادیو کی اہلخانہ کیساتھ انسانی ہمدردی کی بنیادی پر ملاقات کرائی گئی لیکن ۔ ۔ ۔“ بھارتی جاسوس کی ملاقات کے بعد کشمیری رہنماءیاسین ملک کی اہلیہ بھی میدان میں آگئیں، ایسی بات کہہ دی کہ آپ کو بھی بھارت پر شدید غصہ آئے گا

کلبھوشن یادیو کی اہل خانہ سے ملاقات کی تصویر منظر عام پر آئی تو بھارتی ٹی وی چینل ”انڈیا ٹوڈے“ نے ان تصاویر کو اپنی سکرین کی زینت بنا دیا اور کلبھوشن یادیو کے کوٹ کو خبر کی بنیاد پر بنا یا، انڈین ٹی وی کے نیوز اینکر کا کہنا تھا کہ کلبھوشن یادیو پر پاکستانی حکام کی جانب سے تشدد کیا گیا تھا اور کوٹ اس لئے پہنایا گیا تاکہ اس پر ہونے والے تشدد کو چھپایا جا سکے۔اس کے ہاتھ اور بازو سکڑ چکے ہیں جبکہ اس کا چہرہ بھی اندر کو دھنس چکا ہے اور وہ ہڈیوں کا ایک مجموعہ بن چکا ہے۔ کلبھوشن یادیو کی پہلی تصویر سے اگر موجودہ تصویر کا موازنہ کریں تو اب اس کا جسم سکڑ گیا ہے اور پاکستان نے اس کو سوٹ پہنایا تاکہ اسے خوبصورت بنا کر کیمروں کے سامنے پیش کیا جا سکے۔ایک لمحے کو ٹھہرئیے ، کلبھوشن یادیو اور اس کے خاندان کی تصویر شیشے کے باہر سے بنائی گئی تھی جس کی وجہ سے روشنی تصویر پر پڑ رہی ہے مگر بھارتی میڈیا نے اس کا توڑ بھی نکال لیا ۔ انڈیا ٹوڈے کا کہنا ہے کہ یہ سب کچھ اس کے چہرے کو چھپانے کے لئے کیا گیا تھا۔اس کمرے میں بظاہر تو تین افراد ہیں مگر اس ملاقات کے دوران کوئی چوتھا آدمی بھی ہے جو کیمرے میں نظر نہیں آرہا لیکن اس کا عکس شیشے پر پڑ رہا ہے۔

لائیو ٹی وی پروگرامز، اپنی پسند کے ٹی وی چینل کی نشریات ابھی لائیو دیکھنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...