فیکٹری ملازم نوکری سے نکالے جانے پر عدالت پہنچ گیا

فیکٹری ملازم نوکری سے نکالے جانے پر عدالت پہنچ گیا

  

لاہور(نامہ نگار)نجی فیکٹری سے نکالے جانے والے محنت کش مزدور نے تنخواہ نہ دینے اور زبردستی محبوس رکھنے جانے پر فیکٹری کے ایڈمن مینجر اور سپروائزر سمیت3افراد کے خلاف سیشن کورٹ میں اندراج مقدمہ کی درخواست دائر کردی ۔ایڈیشنل سیشن جج مسعود احمد نے ایس ایچ تھانہ سندر سے 4مارچ کو جواب طلب کرلیا ہے ۔عدالت میں درخواست گزار مبشر حسین نے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ سائل عرصہ4سال سے ایک نجی فیکٹری میں ملازمت کررہا تھا تاہم اس کے ایک عزیز کی فوتگی ہونے پر وہ 12جنوری کو سپروائزر کو اطلاع دے کر ایک دن کی رخصت پر چلا گیا لیکن جب وہ 13جنوری کوفیکٹری واپس آیا تو سے بتایا گیا کہ اسے نوکری سے فارغ کردیا گیا ہے اور وہ اپنی تنخواہ23جنوری کو آکر فیکٹری سے لے جائے ،بعدازاں سائل جب تنخواہ لینے فیکٹری پہنچا تو وہاں پر موجود سیکیورٹی گارڈ نے اسے 4گھنٹے تک کمرے میں بند رکھا      اور کہا کہ ایڈمن مینجر عبدالقادر ،سپروائزر عمر اور توصیف نے ایسا کرنے کا حکم دیاہے ،اس حوالے سے مقامی تھانے میں درخواست دی گئی لیکن پولیس نے کوئی کارروائی نہیں کی ہے عدالت سے استدعا ہے کہ مذکورہ افراد کے خلاف کارروائی کا حکم دیا جائے ،عدالت نے آئندہ سماعت پر متعلقہ ایس ایچ او سے جواب طلب کرلیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -