زرعی یونیورسٹی کی منظوری کے بعد عبد ا لوحید ارائیں سے کوئی اختلاف نہیں رہا،جاوید ہاشمی

زرعی یونیورسٹی کی منظوری کے بعد عبد ا لوحید ارائیں سے کوئی اختلاف نہیں ...

  

 ملتان ‘ کبیروالا (سٹاف رپورٹر 228 نامہ نگار) سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے مخدوم رشید کی 50ایکڑ سے زائد اراضی پر زرعی یونیورسٹی بنانے کی منظوری دے دی ہے جس کا اعتراف صوبائی وزیر چوہدری عبدا لوحید ارائیں نے بھی کر دیا ہے جس کی بعد میرا وحید ارائیں سے کوئی اختلاف نہیں رہا آج مخدوم رشید سمیت پورے جنوبی پنجاب کے عوام خوش ہیں کہ انہیں زرعی یونیورسٹی کیلئے جگہ مل گئی ہے کیونکہ مخدوم رشید کے علاوہ زمین اور کسی جگہ نہیں مل سکتی تھی وحید ارائیں بچہ ہے دو سال میں ہی اس نے زمین پرقبضہ کیا جس نے اسے اوپر چڑھا یا انہوں نے ہی اتار دیا ان علیحد ہ صوبے کے حق میں ہوں نام کوئی بھی رکھ دیں لیکن الگ صوبہ ضرور بننا چاہیے کیونکہ اتنا بڑا صوبہ ایک وزیراعلیٰ نہیں سنبھال سکتا انہوں نے مزید کہا کہ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کے دوران کیا انہوں نے مزید کہا کہ آج کا دن خوشی کا دن ہے ملتان میں تعلیم وصحت اور دیگر ترقیاتی منصوبوں بارے جو میرا مشن تھا بالخصو ص تعلیم کا مشن پورا ہو گیا ملتان سمیت جنوبی پنجاب کی عوام مخدوم رشید کے مکینوں خاندان اور سول سو سائٹی کے سامنے سرخرو ہو ا ہوں کہ زرعی یونیورسٹی کے لئے چار مربعے زمین مل گئی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ ملتان انتظامیہ کا بھی شکر گزار ہوں اس علاقے سے وزیراعظم ، گورنر ، وزیر خارجہ اور وزراء بنے لیکن کسی بھی سیاستدان نے ایسا کوئی مطالبہ نہیں کیا لیکن میں نے مطالبے کیے اور وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے مانے تاہم اس پر عملدرآمد کچھ تاخیر سے ہوا اب یونیورسٹی کا نام وحید ارائیں کے نام سے رکھ دیں مجھے تو ایک ادارہ چاہیے تھا جو بن گیا میں اعتراف کرتا ہوں کہ جب بھی کسی ادارے کا مطالبہ کیا شہباز شریف نے فوراً مان لیا انہوں نے کہا کہ مجھے تختیاں لگوانا ہوتیں تو انٹرنیشنل ائرپورٹ ، کارڈیالوجی ، چلڈرن کمپلیکس ، کڈنی سنٹر ، کینسر ہسپتال جیسے منصوبوں کی تکمیل کیلئے بھر پور کردا رادا کرتے ہوئے اپنے نام کی تختیاں ضرور لگواتا ۔سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ کرکٹ ٹیم کی کارکردگی سے مایوسی ہوا ہوں انڈیا سے ہارنا افسوس ناک ہے بہتر ہے کرکٹ ٹیم عمران خان کے حوالے کر دی جائے وہ اسے سید ھا کر دیں گے مگر اردگر د کے لوگ انہیں سیاست نہیں کرنے دیں گے ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ نجم سیٹھی کو اچھی طرح جانتا ہوں انہیں کرکٹ میں نہیں آنا چاہیے تھا انہوں نے کہا کہ معین خان کو کسینومیں کھانا کھانے کی ضرورت کیوں پیش آئی سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی سے جب سوال کیا گیا کہ ایک سروے کے مطابق مخدوم شاہ محمود قریشی کا مستقبل تابناک دکھایا گیا ہے آنے والے وقتوں میں وہ بڑی وزارت پر آسکتے ہیں تو مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ میری دعا ہے کہ ملتان سے کوئی اور بھی وزیراعظم بن جائے ۔ سیاست کی راہوں میں زندگی اور موت کو شاہی قلعوں میں بند ہوکر بڑے قریب سے دیکھا،کبھی سیاست میں کردار ادا کرنے کے لئے بھیک مانگنے کسی کے در پر نہ گیا اور نہ جاؤں گا ،ہمیشہ جراتمندانہ اور بااصول سیاست کی ہے ،ان خیالات کا اظہار سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے مسلم لیگ(ن) یوتھ ونگ کبیروالا کے سٹی صدر حاجی عبدالطیف صابر کی رہائش گاہ پر انکی بھاوج کی وفات پر اظہار تعزیت کرنے کے بعد معززین علاقہ اور لیگی کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ میں نے ہمیشہ اقتدارکی منزلوں کی بجائے ملک وقوم کے مفاد کو ترجیح دی ،آئندہ بھی اس مقصد کے لئے آخری حد تک جانا پڑا تو جاؤں گا۔ انہوں نے کہا کہ ہاشمی کو اس وقت نہ جھکایا اور خریدا جاسکا ،جب جسمانی تشدد کیا گیا ،پس دیوار زنداں بھیجا گیا ،برف کے بلاکوں پر برہنہ لٹایا گیا ۔مزید انہوں نے کہا کہ اصولی سیاست اور آئین کی بالادستی کے لئے قربان دینا ہی پڑتی ہیں ۔اس موقع پر مسلم لیگ (ن) یوتھ ونگ کبیروالا کے عہدیدار ملک خالد الرحمن،رانا محمد آصف سعیدی ،صدر شعبہ خواتین زبیدہ راؤ ،ملک ناصر کھوکھر اور دیگر کارکنان کثیر تعداد میں موجود تھے ۔ جاوید ہاشمی

مزید :

صفحہ آخر -