چینی حکومت بحیرہ جنوبی چین کے متنازع جزائر میں فوجی تنصیبات و آلات کی تنصیب میں اضافہ کر رہی ہے،امریکی ادارے کی رپورٹ

چینی حکومت بحیرہ جنوبی چین کے متنازع جزائر میں فوجی تنصیبات و آلات کی تنصیب ...

  

واشنگٹن (اے پی پی) ایک امریکی تحقیقی ادارے کا کہنا ہے کہ چین کی حکومت بحیرہ جنوبی چین کے متنازع جزائر میں اپنی فوجی تنصیبات اور فوجی آلات کی تنصیب میں اضافہ کر رہی ہے۔امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق واشنگٹن میں قائم ادارے ’’سینٹر فار اسٹریٹجک اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز‘‘نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ چین کے یہ اقدامات متنازع جزائر کو کنٹرول کرنے کی اس کی صلاحیت میں اضافہ کریں گے۔امریکی ادارے نے یہ رپورٹ ایسے وقت جاری کی ہے جب چین کے وزیرِ خارجہ وانگ یی اپنے امریکی ہم منصب جان کیری کی دعوت پر امریکاکا دورہ کرنے والے ہیں۔رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ چین بحیرہ جنوبی چین کے ان تمام جزائر پر راڈار نظام بھی نصب کر رہا ہے جن پر خطے کے دیگر ممالک ملکیت کے دعویدار ہیں۔امریکی ادارے نے متنازع علاقے کی سیٹلائٹ تصاویر بھی جاری کی ہیں جن میں بحیرہ جنوبی چین کے جزائر پر ایک لائٹ ہاؤس، ہیلی پیڈ، زیرِ زمین مورچے اور دیگر مواصلاتی آلات نظر آرہے ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جزائر پر نصب کیے جانے والے راڈار نظام کے نتیجے میں جنوبی بحیرہ چین کے شمالی علاقوں میں بحری اور فضائی ٹریفک پر نظر رکھنے کی چین کی صلاحیت میں خاطر خواہ اضافہ ہوجائے گا۔

امریکی ادارے نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ چین متنازعہ جزائر میں واقع دیگر سمندری چٹانوں پر بھی راڈار تنصیبات قائم کر رہا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -