اورنج ٹرین منصوبے کیلئے بچوں سے مشقت کرانے کیخلاف درخواست پر اٹارنی جنرل، وزارت قانون اور پنجاب حکومت سے 30 مارچ تک جواب طلب

اورنج ٹرین منصوبے کیلئے بچوں سے مشقت کرانے کیخلاف درخواست پر اٹارنی جنرل، ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے کے لئے بچوں سے مشقت کرانے کے خلاف درخواست پر اٹارنی جنرل، وزارت قانون اور پنجاب حکومت سے 30 مارچ تک جواب طلب کر لیا۔جسٹس شجاعت علی خان نے شیراز ذکاء ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب حکومت اورنج ٹرین منصوبے کیلئے مختلف مقامات پر بچوں سے مشقت کرا رہی ہے، ایسے مقامات جہاں پر سیمنٹ، بجری اور اینٹوں کی توڑ پھوڑ کا کام ہو رہا ہے وہ بچے مزدوری کر رہے ہیں، جن بچوں کو حکومت کی طرف سے تعلیم فراہم کی جانی ہے، ان بچوں کو حکومت نے اوزار پکڑا دیئے ہیں، انہوں نے مزید مؤقف اختیار کہ بچوں کو تعلیم فراہم کرنا حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے، انہوں نے استدعا کی کہ حکومت کو اورنج ٹرین منصوبے کے لیے بچوں سے مزدوری کرانے سے روکا جائے، چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ میں 14سال تک کے بچوں کو تحفظ دینے کا ذکر ہے جبکہ آئین میں یہ عمر 16سال ہے ۔ایکٹ میں ترمیم کرکے یہ عمر 16سال مقرر کرنے کا حکم بھی دیا جائے ۔

مزید :

صفحہ آخر -